-،-کلبھوشن سمیت کوئی قاتل قابل رحم نہیں ۔محمدناصراقبال خان-،-
ہیومن رائٹس موومنٹ کے مرکزی صدرمحمدناصراقبال خان،چیف آرگنائزر میاں محمدسعید کھوکھرایڈووکیٹ،آرگنائزرز رابعہ رحمن، سیکرٹری جنرل محمدرضاایڈووکیٹ ،سینئر نائب صدور ندیم اشرف،روحی بانوکوکھرایڈووکیٹ ،سلمان پرویز ،مرکزی نائب صدور ناصرچوہان ایڈووکیٹ، ممتاز حیدر اعوان ،محمدشاہدمحمود ،صدر پنجاب محمدیونس ملک،نائب صدرشبیر حسین رندھاوا ،صدرمدینہ منورہ سرفرازخان نیازی،صدر چنیوٹ راناشہزادٹیپو ،صدرفیصل آبادندیم مصطفی ،صدر ٹیکسلا سردارمنیراختر اورصدرقصور میاں اویس علی نے کہا ہے کہ کلبھوشن یادیو سمیت دنیاکا کوئی قاتل قابل رحم نہیں،سزادے دی جائے۔دہشت گردی کے معاملے میں بھارت کی چوری اورسینہ زوری بے نقاب ہوگئی ۔سانحہ گجرات کامرکزی ملزم نریندرمودی انتہاپسندی کی بدولت بھارت کاوزیراعظم بنابیٹھا ہے جبکہ بھارت کے مسلمان آج بھی اپنے پیاروں کی اندوہناک موت کا ماتم کررہے ہیں۔پاکستان کی پڑوسی ریاست دہشت گردوں کی نرسری اور سرپرست ہے۔کلبھوشن یادیو کی سزائے موت کے معاملے میں بھارت کی بوکھلاہٹ ،جھنجلاہٹ اور اشتعال انگیز ی پاکستان کومرعوب نہیں کرسکتی ۔جس وقت کلبھوشن ہزاروں بیگناہ پاکستانیوں کی جان لے رہا تھا اس وقت مودی سرکار کہاں تھی ،اب اس قاتل کی جان شکنجے میں آئی ہے توبھارت آپے سے باہرکیوں ہورہاہے ۔وہ ایک اجلاس سے خطاب کررہے تھے ۔محمدناصراقبال خان نے مزید کہا کہ بھارت سرکار کاپاکستان میں سزائے موت کے منتظر قیدی کلبھوشن یادیو کی حمایت میں بولنا بلکہ چیخنا پاکستان کی تحقیقات کی تائیدکرنے کے مترادف ہے ۔بھارتی پروپیگنڈے کاتوڑکرنے کیلئے پاکستان کلبھوشن یادیو کے کرتوت منظرعام پرلے آئے ،دوست ملکوں سمیت مختلف سفارت کاروں کونیاڈوزئیر پیش کیاجائے ۔انہوں نے کہا کہ بھارت سات دہائیوں سے پاکستان میں دہشت گردی میں ملوث ہے ۔بھارت نے اپنے مذموم مفادات کیلئے پاکستان میں متعدد میرجعفر اورمیرصادق پیداکئے اوران کی مددسے منافرت ،صوبائیت اورلسانیت کی آگ بھڑکائی ۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں آبی ذخائرکی تعمیر روکنا بھی بھارت کی ترجیحات میں سرفہرست ہے۔ایک طرف بھارت کی آبی جارحیت اوردوسری طرف پاکستان میں معصوم انسان کے خون سے ہولی کھیلنا اقوام متحدہ کے ضابطہ اخلاق کی دھجیاں بکھیرنے والی بات ہے ۔انہوں نے کہا کہ مقتدر ملک مجرمانہ طورپر خاموش رہ کربھارت کے گناہوں کابوجھ اپنے ضمیر پرمحسوس کیوں نہیں کرتے۔