-،-ایوان میں اسکول کی طرح حاضری سسٹم رائج کیا جائے ‘ راجونی اتحاد -،-
کراچی ( اسٹاف رپورٹر ) پاکستان راجونی اتحاد میں شامل ایم آر پی چیئرمین امیر پٹی ‘پاکستان عوامی پارٹی کے چیف آرگنائزر ڈاکٹر نواز ملاح ‘ این جی پی ایف چیئرمین عمران چنگیزی‘ سردار خادم حسین سولنگی ‘ اشتیاق ارائیں ‘ اقبال ٹائیگر مارواڑی‘ یونس سایانی‘ امیر علی خواجہ‘یحییٰ خانجی تنولی ‘ اقبال چاند‘فیض محمد لغاری ‘نواز ملاح ‘ محبوب خان اچکزئی ‘حق نواز ربوانی ‘سونہار وریام بلوچ ‘ خان محمد جوکھیو ‘ احمد علی جتوئی ‘ اسماعیل لاکھا‘غلام نبی چانڈیو ‘غلام محمد ڈاہری ‘ اقبال ہنگورو ‘ عبدالرزاق لاکھانی ‘داؤد ابراہیم و دیگرنے کہا ہے کہ چیئرمین سینیٹ کا حکومتی اراکین و وزرأ کے رویئے پر احتجاج اس بات کا ثبوت ہے کہ اختیار و اقتدار پر قابض استحصالیوں کونہ تو عوام کے مسائل و مصائب سے کوئی دلچسپی ہے اور نہ ہی وطن عزیز کو لاحق خطرات و خدشات سے انہیں کوئی سروکار ہے انہیں صرف اپنی تنخواہوں ‘ مراعات اور اختیار ات کی فکر لاحق رہتی ہے اور جب ایوان کا اجلاس ان کے مفادات کے حوالے سے ہوتا ہے تو ہر سیاسی جماعت کے تمام کے تمام اراکین ایوان میں دکھائی دیتے ہیں مگر جب بات قومی و عوامی مفادات کی ہو تو سیاستدان یا تو ایوان سے غائب رہے ہیں یا پھر اپنی نشستوں پرخواب خرگوش کے مزے لوٹتے ہیں اسلئے اب قوم کو یہ جان لینا چاہئے کہ ایوانوں میں ایسے ملک و قوم اور عوام دشمنوں کو بھیجنے کی بجائے اپنی اپنی برادری کے مخلص نمائندوں کو اپنے ووٹ سے ایوان اقتدار میں بھیجنا ہی ان کے محفوظ مستقبل اور استحصالیوں کی قید سے ان کی آزادی کا ضامن بن سکتا ہے ۔