-،-بلدیہ ٹاؤن کے عوام کو علاج کی سہولیات فراہم کی جائیں ‘ آئی ایم ایس او-،-
کراچی ( اسٹاف رپورٹر) محنت کش کی محنت معاشرے ‘ ملک اور قوم کی ترقی کی ضمانت ہے جس کیلئے محنت کش کی صحت کی حفاظت ضروری ہے مگر افسوس کہ گجراتی بولنے والے میمن ‘ کچھی ‘ کاٹھیاواڑی ‘ گجراتی اوردیگر محنت کش طبقات کی اکثریت پر مشتمل بلدیہ ٹاؤن ‘ سعید آباد ‘ مواچھ گوٹھ اور اس سے ملحق دیگر علاقوں کے محنت کش دیگر سہولیات کے ساتھ علاج جیسی بنیادی ضرورت تک سے محروم ہیں ۔ اصلاح میمن سماج آرگنائزیشن اور جونا گڑھ مسلم انجمن کے عہدیداران فرزند جونا گڑھ اقبال چاند ‘ نورمحمد وارثی ‘ عبدالغفار اُپلیٹا والا ‘ اسلم ترک‘ یونس سایانی ‘ روبینہ شاہین ‘ زہرہ نگار ‘ صدیق بلوچ ایڈوکیٹ ‘ ایڈوکیٹ یاسین مہران والا ‘ خیرألنساء ایڈوکیٹ اور لیگل ایڈوائزر وماہر قانون الطاف میمن ایڈوکیٹ نے وفاقی حکومت و مسلم لیگ (ن) کی نمائندگی کرنے والے گورنر سندھ محمد زبیر ‘ وزیراعلیٰ سندھ سید مرادعلی شاہ ‘صوبائی وزیر صحت اور ممبر قومی اسمبلی بلدیہ ٹاؤن سلمان مجاہد بلوچ سے علاقے کی عوام کو صحت و علاج کی سہولیات کی فراہمی کا مطالبہ کرتے کہا کہ بلدیہ ٹاؤن میں اربن ہیلتھ سینٹرکے نام سے 4نمبر مارکیٹ میں ‘ بیسک ہیلتھ سینٹر کے نام سے روبی سینما کے ساتھ اور میٹرنیٹی اینڈ نرسنگ یونٹ کے نام سے مواچھ گوٹھ میں30برس قبل تعمیر ہونے والے تینوں اسپتال افتتاح ‘ عملے اور ادویات سے محرومی کے باعث جرائم پیشہ و سماج دشمن عناصر کا مسکن بنے ہوئے اسلئے ان اسپتالوں کو مرمت اور یہاں ادویات و اسٹاف کا انتظام کرکے ان کا باقاعدہ افتتاح کیا جائے تاکہ علاقے کے عوام کی علاج کی سہولیات سے فیضیاب ہوسکیں ۔گجراتی‘ میمن او ر جونا گڑھی رہنماؤں نے کوآرڈی نیٹر چیف منسٹرہاؤس صدیق ابوبھائی ‘ نواب آف جونا گڑھ جہانگیر خانجی ‘ سماجی ومیمن رہنما حاجی حنیف طیب ‘ صدر میمن فیڈریشن عبدالعزیز میمن ‘ صدر جوناگڑھ فیدریشن اقبال ساندھ‘ چیئرمین گجراتی قومی موومنٹ گجراتی سرکار امیر پٹی اور سابق صوبائی وزیر مجاہد خان بلوچ سے اس سلسلے میں اپنے کردار کی ادائیگی اور اثرورسوخ کے استعمال کا مطالبہ بھی کیا ۔