-،-مشال قتل کیس میں مذہبی قیادت کا کردار قابل تحسین ہے‘راجونی اتحاد -،-
کراچی ( اسٹاف رپورٹر )مشال قتل کیس میں مذہبی جماعتوں کے کردار کو سراہتے ہوئے پاکستان راجونی اتحاد میں شامل ایم آر پی چیئرمین امیر پٹی ‘پاکستان عوامی پارٹی کے چیف آرگنائزر ڈاکٹر نواز ملاح ‘ این جی پی ایف چیئرمین عمران چنگیزی‘ سردار خادم حسین سولنگی ‘ اشتیاق ارائیں ‘ اقبال ٹائیگر مارواڑی‘ یونس سایانی‘ امیر علی خواجہ‘یحییٰ خانجی تنولی ‘ اقبال چاند‘فیض محمد لغاری ‘نواز ملاح ‘ محبوب خان اچکزئی ‘حق نواز ربوانی ‘سونہار وریام بلوچ ‘ خان محمد جوکھیو ‘ احمد علی جتوئی ‘ اسماعیل لاکھا‘غلام نبی چانڈیو ‘غلام محمد ڈاہری ‘ اقبال ہنگورو ‘ عبدالرزاق لاکھانی ‘داؤد ابراہیم و دیگرنے کہا ہے کہ مذہبی جماعتوں نے مشال قتل کیس میں انصاف کے مطالبہ اور قاتلوں کے ظالمانہ اقدام کی مذمت کے ذریعے توہین رسالت ؐ کے نام پر ذاتی رنجش و منافقت اور مفادات کیلئے قتل انسانی کا راستہ روک دیا ہے جس کیلئے تمام طبقہ ہائے فکر کے علمائے دین خراج تحسین کے مستحق ہیں ۔ راجونی رہنماؤں نے مزید کہا کہ ریاست کی ذمہ داری ہے کہ وہ ایک جانب ناموس رسالت ؐ کے تحفظ کیلئے اقدامات اٹھائے تو دوسری جانب ناموس رسالت کا سہارالیکر مذہبی جذبات کو سیاسی و ذاتی مفادات کے استعمال کے رجحان کو بھی ختم کرے جبکہ مشال قتل کیس میں قاتلوں اور انہیں ا س قتل پر اکسانے والے سازشیوں کا بھی مکمل انصاف کیا جائے کیونکہ یہ قتل تحفظ ناموس رسالت قانون کیخلاف سازش کے ذریعے ملک میں انارکی پھیلانے کا اسرائیلی ‘ امریکی یا بھارتی منصوبہ بھی ہوسکتا ہے !