-،-آزادی اظہارعوام کاحق ،کوئی نہیں چھین سکتا۔محمدناصراقبال خان-،-

mnk

محمدناصراقبال خان
ہیومن رائٹس موومنٹ کے مرکزی صدرمحمدناصراقبال خان،چیف آرگنائزر میاں محمدسعید کھوکھرایڈووکیٹ، سیکرٹری جنرل محمدرضاایڈووکیٹ ،سینئر نائب صدور ندیم اشرف،تنویرخان ،روحی بانوکوکھرایڈووکیٹ ،سلمان پرویز،آرگنائزر جاویدیوسف ،مرکزی نائب صدور ناصرچوہان ایڈووکیٹ، ممتاز حیدر اعوان ،محمدشاہدمحمود،سیکرٹری اطلاعات نسیم الحق زاہدی ،صدر پنجاب محمدیونس ملک،نائب صدرشبیر حسین ،صدرنیویارک محمد جمیل گوندل، صدر مدینہ منورہ سرفرازخان نیازی،صدرکراچی یونس میمن ،صدر چنیوٹ راناشہزادٹیپو ،صدرفیصل آبادندیم مصطفی ،صدر ٹیکسلا سردار منیر اختر اور صدر قصور میاں اویس علی نے کہا ہے کہ آزادی اظہارعوام کابنیادی حق ہے جوکوئی نہیں چھین سکتا۔قومی ایشوزپر تحریر وتقریر ،ڈائیلاگ، تبصرہ یاتنقید اہل صحافت سمیت عام شہریوں کا بنیادی انسانی اورآئینی حق ہے۔ ہرمعاشرے میں زندہ ضمیرلوگ مختلف موضوعات پر باتیں اورایک دوسرے سے اصولی اختلاف کرتے ہیں،انہیں خاموشی اختیارکرنے پرمجبورنہیں کیاجاسکتا ۔ حکمران صبر وتحمل سے تنقید برداشت کریں یاپھراقتدار چھوڑدیں۔جولوگ پاکستان سے والہانہ محبت کرتے اوراس کی حفاظت کیلئے سردھڑ کی بازی لگاتے ہیں،یقیناًوہ خاموش نہیں رہ سکتے ۔اگرکوئی تنقیدکی آڑمیں ریاست یاکسی ریاستی ادارے کی توہین کرے تواس کوضرور گرفتارکیاجائے۔ کوئی قومی اداروں کی توہین کرنے کاحق نہیں رکھتا لیکن حکمران تنقیداورتوہین کومکس نہ کریں ۔وہ ایک اجلاس سے خطاب کررہے تھے ۔محمدناصراقبال خان اورمیاں محمدسعیدکھوکھر نے مزید کہا کہ ہمارا دین بھی ایک دوسرے کی توہین کی اجازت نہیں دیتا ،تاہم جہاں جہاں حکمران غلطیاں کریں گے وہاں وہاں ان پرتنقید ضرورہوگی۔ تحریروتقریر کی آزادی بھی ووٹ کاحق استعمال کرنے کی طرح ہے۔۔انہوں نے کہا کہ پرویز مشرف اپنے دورآمریت میں سوشل میڈیا پرہونیوالی تنقید سے مضطرب یا مشتعل ہوئے اورنہ ا نہوں نے شہریوں پر کسی قسم کی پابندی لگائی لہٰذاء منتخب حکمران بھی عوام کی سوچ پرپہرہ بٹھانے سے بازرہیں۔وفاقی وزیراطلاعات کااپنے حالیہ بیان میں سوشل میڈیا پرحکومت کیخلاف تنقید کرنیوالے پاکستانیوں کیخلاف قانونی کاروائی کاعندیہ انسانی حقوق اورجمہوری آزادی کے تصورات سے متصادم ہے ۔انہوں نے کہا کہ حکمرانوں کاانتخاب ووٹ سے ہوتا ہے ،اقتدارمیں آنے کے بعدوہ یہ بات کیوں بھول جاتے ہیں۔ووٹرز سمیت پاکستان کاہرباشعوراورباضمیر شہری حکومت کے متنازعہ اقدامات سے اظہاربیزاری اوراس پرمثبت تنقید کرنے کاحق رکھتا ہے۔انہوں نے کہا کہ ووٹرز حکمرانوں سے زیادہ پاکستان کے سٹیک ہولڈرز ہیں۔