-،-جمہوری نظام کا دوام انتخابی اصلاحات سے وابستہ ہے۔جہاں آراء وٹو-،-

wattoo

جہاں آراء وٹو
پاکستان پیپلزپارٹی کی مرکزی رہنما جہاں آراء وٹونے کہا ہے کہ جمہوری نظام کادوام اوراستحکام انتخابی اصلاحات سے وابستہ ہے۔پیپلزپارٹی سمیت پاکستان کی قابل ذکرپارٹیاں 2018ء کے انتخابات سے قبل دوررس انتخابی اصلاحات کی خواہاں ہیں۔ حکمران جماعت نے انتخابی مہم شروع کردی مگرانتخابی اصلاحات کاوعدہ وفا نہیں کیا ۔یقیناشکست کا ڈر حکمرانوں کوانتخابی اصلاحات سے روک رہا ہے ،مگر ہم انتخابی اصلاحات تک اپنامطالبہ دہراتے رہیں گے۔ حکومت سات روز کے اندراندر انتخابی اصلاحات یقینی بنائے ورنہ پیپلزپارٹی عدالت کادروازہ کھٹکھٹائے گی ۔پاکستان میں جمہوریت کی گاڑی ڈی ریل نہ ہواسلئے آراوالیکشن کانتیجہ تسلیم کیا لیکن 2018ء کے انتخابات میں کسی قسم کی دھونس دھاندلی برداشت نہیں کریں گے۔وہ اپنے اعزازمیں ایک استقبالیہ تقریب سے خطاب کررہی تھیں۔ جہاں آراء وٹونے مزید کہا کہ غیرجمہوری قوتوں کیخلاف منتخب ایوانوں اورمیدانوں میں سیاسی مزاحمت پیپلزپارٹی کاطرہ امتیاز ہے ۔ہم شہیدوں کے وارث ہیں ،جمہوریت کی قدروقیمت ہم سے بہترکوئی نہیں جان سکتا۔انہوں نے کہا کہ ذوالفقارعلی بھٹوشہید اوربینظیر بھٹوشہید نے پاکستان میں جمہوریت کواپنے خون سے سینچا ہے ۔ہماری قیادت اورہمارے نمائندے عوام میں سے ہیں ،کوئی باوردی یابغیر وردی آمر ہمارے اورعوام کے درمیان فاصلے پیدانہیں کرسکتا۔انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی نے سابق صدرمملکت آصف علی زرداری کے دورحکومت میں پڑوسی ملکوں کے ساتھ برابری کی بنیادپرخوشگوارتعلقات کوفروغ دیا مگر موجودہ حکمرانوں نے اس طر ف کوئی خاص دھیان نہیں دیا۔حکمران داخلی اورخارجی محاذ پربری طرح ناکام ہوگئے ۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کے ایوان اقتدارمیں پرعزم ،تازہ دم اورزیرک سیاسی قیادت کی ضرورت ہے اوراس کیلئے چاروں صوبوں کے عوام پیپلزپارٹی کی طرف دیکھ رہے ہیں۔ذوالفقارعلی بھٹو شہید اوربینظیر بھٹوشہید کی قیادت کاخلاء پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹوزرداری پرکرسکتے ہیں۔