-،-کلبھوشن پھانسی‘ عالمی عدالت حکم امتناع کی کوئی حیثیت نہیں ‘راجونی اتحاد-،-
کراچی ( اسٹاف رپورٹر ) عالمی عدالت کی جانب سے بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو کی پھانسی پر حکم امتناع کو کلبھوشن کی پھانسی میں تاخیری حربوں کے ذریعے بھارت کو کلبھوشن کو بچانے کا موقع فراہم کرنے والوں کی کامیابی قرار دیتے ہوئے پاکستان راجونی اتحاد میں شامل ایم آر پی چیئرمین امیر پٹی ‘ خاصخیلی رہنما سردار غلام مصطفی خاصخیلی ‘ سولنگی رہنما امیر علی سولنگی ‘راجپوت رہنما عارف راجپوت ‘ ارائیں رہنما اشتیاق ارائیں ‘ مارواڑی رہنما اقبال ٹائیگر مارواڑی ‘ بلوچ رہنما عبدالحکیم رند ‘ میمن رہنما عدنان میمن‘ہیومن رائٹس رہنما امیر علی خواجہ ‘خان آف بدھوڑہ یحییٰ خانجی تنولی فرزند جونا گڑھ اقبال چاند اور این جی پی ایف کے چیئرمین عمران چنگیزی ودیگر نے کہا ہے کہ عالمی عدالت کا کلبھوشن یادیو کے معاملے میں حکم امتناع کوئی حیثیت نہیں رکھتا اور پاکستان جب چاہے کلبھوشن کو پھانسی دیکر انصاف و قانون کے تقاضے پورے کرسکتا ہے کیونکہ ویانا کنونشن کے مطابق بھارت اور پاکستان چند معاملات پر عالمی عدالت کے دائرہ کار کو تسلیم ہی نہیں کرتے جبکہ کلبھوشن یادیو کا معاملہ بھی ایسے ہی معاملات میں آتا ہے اسلئے عالمی عدالت کے حکم امتناع کے مطابق بھارتی جاسوس کی پھانسی میں تاخیر قوم اور دہشتگردی کی جنگ میں زندگی ہارنے والے شہداء سے زیادتی کے مترادف ہوگی .