۔،۔حضرت مولانا شوکت علی مدنی کی والدہ ماجدہ جہان فانی سے کوچ کر گئیں،جاوید بھٹی۔،۔
۔،۔جب قیامت برپا ہو گی تو میں ماں کے قدموں کے نیچے چھپ جاوُں گا۔،۔

شان پاکستان جرمنی فرینکفرٹ۔وجہ کائنات، کائنات کے سردار، جنت کے چابی بردار ،مقام محمود کو سجانے والے، شفاعت کا تاج سر پر رکھنے والے، اللہ کا جھنڈا پکڑنے والے، آپ نے فرمایا کوئی نبی جنت میں جا نہیں سکتا جب تک میں نہ چلا جاوُں، وہ یہ تمنا کر رہے ہیں ،کاش میری ماں زندہ ہوتی ، میں اس کی ایسی خدمت، نوکری کرتا کہ میں عشاء کی نماز کے لئے کھڑا ہوتا ، صورہ فاتح پڑھ رہا ہوں ، گھر سے آواز آتی بیٹا محمدؐ تو میں ماں کے لئے نماز توڑ دیتا، لبیک اماں لبیک نماز تو پھر بھی پڑھ سکتا ہوں، انہوں نے فرمایا تھا کہ اویس سے دعا کروایا کرو کیوں کے اویس نے اپنی ماں کی اتنی خدمت کی تھی کہ اللہ ان کی ہر دعا قبول کرتا ہے،یہ ہے ماں کی شان ، ایسی ہی ایک ماں جو حضرت مولانا شوکت علی مدنی کی والدہ ماجدہ ہیں اس دنیا سے منتقل ہو چکی ہیں اسی سلسلہ میں شوکت علی مدنی پاکستان روانہ ہو چکے ہیں، کہتے ہیں ناں کہ ایک بچے نے جب قیامت کا قصّہ سنا تو فوراََ بولا کہ جب قیامت برپا ہو گی تو میں ماں کے قدموں کے نیچے چھپ جاوُں گا ، کیوں کہ اس نے سنا تھا کہ ماں کے قدموں کے نیچے جنت ملے گی۔ اہل علم کا ارشاد ہے کہ موت عدم محض اور فناء صرف کا اسم نہیں ہے۔موت تو روح کے تعلق کے خاتمے کا نام ہے اور ایک حباب ہے چار ہزار نبیوں کے باپ کے صدقے ان کو جنت الفردوس میں جگہ عطاء فرمائے۔ شان پاکستان جرمنی اور پاکستان پریس کلب جرمنی فرینکفرٹ کے تمام عہدہ داران ،مولانا شرکت علی مدنی کے غم میں برابر کے شریک ہیں۔

iz