-،-وزیراعظم اہلیت و عوامی ساکھ دونوں سے محروم ہوچکے ہیں ‘ ایم آر پی-،-
وزیراعظم نے استعفیٰ نہیں دیا تو عدالت انہیں برخواست کرنے پر مجبور ہوگی‘امیرعلی پٹی والا
عدلیہ سے حکومتی محاذ آرائی جمہوریت و جمہوری نظام کیلئے مضر فوجی مداخلت کا باعث بنے گی !

کراچی ( اسٹاف رپورٹر )محب وطن روشن پاکستان پارٹی کے قائد و چیئرمین امیر پٹی نے کہا ہے کہ سپریم کورٹ کے حکم پر تشکیل کردہ جے آئی ٹی کی رپورٹ نے حکمران خاندان کے چہرے پر پڑا حب الوطنی کا نقاب ایک ہی جھٹکے میں اتارکر ان کا عوام دشمن سفاک چہرہ قوم کے سامنے بے نقاب کردیا ہے اب اگر وزیراعظم ‘ان کے اہلخانہ اور حکومتی اراکین پوری قوت سے اس بات کا شور مچاتے رہیں کہ وہ بیگناہ اور کرپشن یا بیرون ملک سرمائے کی منتقلی سے نہ تو ان کا کوئی تعلق ہے اور نہ ہی آف شور کمپنیاں ان کی ملکیت ہیں عوام میں اب ان کی ساکھ بحال نہیں ہوسکتی اس کیلئے انہیں عدالتی و قانونی طریقہ کار اختیارکرنا ہوگا اور جب تک وہ اپنے دفاع میں کامیاب اور عدالتی سے بیگناہی کا سرٹیفکیٹ لینے میں کامیاب نہیں ہوجاتے اس وقت تک ان کا وازارت عظمیٰ سے علیحدہ ہوجانا ہی ان کے مستقبل اور ان کی عوامی ساکھ کیلئے بہتر ہے کیونکہ جے آئی ٹی رپورٹ کے باعث وہ آئین کی شق 62و 63کے مطابق حکمرانی کے اہل نہیں رہے اگر انہوں نے استعفیٰ نہیں دیا تو عدالت انہیں عہدے سے برخواست کرنے پر مجبور ہوگی اور اگر انہوں نے عدالتی فیصلے کو بھی تسلیم کرنے سے گریز کیا تو پھر فوج کو اپنا غیر آئینی کردار ادا کرنا پڑے گا جو نہ تو کسی جمہوریت کیلئے سودمند ہوگا اور نہ ہی جمہوریت پسندوں کو پسند آئے گا اسلئے وزیراعظم کا فوری طور پر مستعفی ہونا ہی ملک و قوم ‘ جمہوریت ‘ عدلیہ ‘ فوج اور خود حکمران جماعت و خاندان کیلئے مفید ہے ۔