-،-پاکستان میں جمہوریت نہیں خاندانی بادشاہت ہے۔روحی کھوکھر-،-
نظام جمہوریت میں بادشاہ کی نااہلی پر اس کاچھوٹابھائی بادشاہ نہیں بنتا

مووآن پاکستان کی مرکزی رہنما روحی کھوکھر ایڈووکیٹ نے کہا ہے کہ مووآن پاکستان این اے120میں اپنا امیدوارنامزدکرنے پرغورکرے گی ۔دس سنجیدہ امیدواروں نے این اے120سے مووآن پاکستان کی پارٹی ٹکٹ کیلئے ہمارے قائداورمرکزی چیئرمین محمدکامران میاں سے باضابطہ درخواست کی ہے تاہم پارٹی قائدین کی باہمی مشاورت کے بعدحتمی فیصلہ کیاجائے گا۔پاکستان میں جمہوریت نہیں موروثیت اورخاندانی بادشاہت ہے۔نظام جمہوریت میں بادشاہ کی نااہلی پر اس کاچھوٹابھائی بادشاہ نہیں بنتا ۔ اشرافیہ کے درمیان اقتدار کی بندربانٹ نے عا م پاکستانیوں کومحرومیوں کے سواکچھ نہیں دیا۔حکمران خاندان موروثی سیاست کی علامت ہے ،بڑابھائی نااہل ہوا توچھوٹابھائی وزیراعظم نامزدہوگیا جوابھی قومی اسمبلی کاممبر بھی منتخب نہیں ہوا۔حکمران جماعت کاحالیہ اقدام ووٹرز کی توہین ہے۔حکمران جماعت کی خوداعتمادی پرتعجب ہے ،انہیں میاں شہبازشریف کی کامیابی کاسوفیصدیقین کس طرح ہے ۔ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے روحی کھوکھرایڈووکیٹ نے مزید کہا کہ وزیراعلیٰ پنجاب کی مستعفی ہوئے بغیر وزرات عظمیٰ کیلئے نامزدگی جہاں قو می ضمیر، اجتماعی شعور اورمنتخب پارلیمنٹ کے ساتھ بھونڈا مذاق ہے وہاں محاورہ ”ساماں سوبرس کااورپل کی خبرنہیں” ان حکمرانوں پرپوری طرح صادق آتا ہے ۔این اے 120میں ابھی ضمنی الیکشن ہوا نہیں ،میاں شہبازشریف وہاں سے کامیاب ہوئے نہیں مگر انہیں وزیراعظم نامزدکردیا گیا۔انہوں نے کہا کہ این اے120میں ہونیوالے ضمنی الیکشن میں کون نامزدوزیراعظم کوشکست دے گا۔سرکاری اہلکاروں کی وفاداریاں کس کے ساتھ ہوں گی ۔انہوں نے کہا کہ این اے120میں ضمنی الیکشن کے دوران سرکاری آفیسر زاوراہلکار کسی صورت غیرجانبدارنہیں رہ سکتے ۔