-،-کئی وزرائے اعظم آئے مگرنجات دہندہ کوئی نہیں آیا ۔محمدکامران-،-
پاکستان اورپاکستانیوں کو ایک نڈرلیڈراور نجات دہندہ کی ضرورت ہے

مووآن پاکستان کے مرکزی چیئرمین محمدکامران میاں نے کہا ہے کہ کئی وزرائے اعظم آئے مگرنجات دہندہ کوئی نہیں آیا ۔پاکستان اورپاکستانیوں کو نادہندہ نہیں بلکہ ایک نڈر لیڈراورسچے نجات دہندہ کی ضرورت ہے۔ایسانجات دہندہ اورمسیحا جواپنا بنک نہیں بلکہ عوام کاپیٹ بھرے ۔جواقتدار کے پیچھے دوڑنے کی بجائے اقدارکوفروغ دے ۔ہماری جماعت مووآن پاکستان اقتدار کی دوڑمیں شریک نہیں۔ مووآن پاکستان عوام کے حق حاکمیت کی خواہاں اوراس کیلئے کوشاں ہیں۔امورمملکت میں عوام کاکردارووٹ پرمہرلگانے تک محدودنہ کیاجائے بلکہ انہیں ہراہم فیصلے میں شریک کیاجائے ۔مشاورت میں حسن ہے ،ہم کامیابی کے بعد اپنے ہم وطنوں کوہرسطح پر مشوروں میں شریک رکھیں گے۔وہ مقامی ہوٹل میں اپنے اعزازمیں استقبالیہ سے خطاب کررہے تھے ۔محمدکامران میاں نے مزید کہا کہ ایوان وزیراعظم اوروفاقی کابینہ میں چہروں کی تبدیلی کافی نہیں، ارباب اقتدار کامائنڈسیٹ بدلنا زیادہ اہم اورضروری ہے۔اقتدار اوروسائل کوقوم کی امانت سمجھا اورقومی وسائل کے ضیاع سے گریزکیاجائے۔انہوں نے کہا کہ اگرجمہوریت کے ثمرات براہ راست عوام تک پہنچاناہیں توووٹرزصادق وامین امیدوارو ں کومنتخب کریں ۔ منتخب نمائندوں کیلئے صادق وامین کاقانون ختم کرنے کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔انہوں نے کہا کہ سندھ اسمبلی میں نیب کیخلاف بل پاس ہونے سے جمہوریت فیل ہوجائے گی۔محتسب سے ڈرنے اوراحتساب کاراستہ روکنے والے یقیناًچور ہیں ۔انہوں نے کہا کہ چوروں کو وطن اورہم وطنوں کی قسمت کے فیصلے کرنے کااختیار نہیں دیاجاسکتا۔ مووآن پاکستان محب وطن جمہوری قوتوں کے درمیان پل کاکرداراداکرتے ہوئے انہیں ایک متفقہ قومی ایجنڈے کی بنیادپرجوڑنے کیلئے سرگرم ہے۔انہوں نے کہا کہ مختلف پارٹیوں نے رابطوں کامثبت جواب دیا ہے ،عنقریب ایک بڑاسیاسی اتحاد معرض وجودمیں آئے گا۔ اقتدار پرست پارٹیوں کے درمیان تناؤاورتصادم سے تعمیروترقی کاپہیہ ؂جام ہوجاتا ہے جبکہ مووآن پاکستان کی تاریخی کامیابی سے پاکستان میں ترقی کاپہیہ مزید تیزرفتاری سے رواں دواں ہوگا۔