-،-مقبوضہ کشمیر میں کشمیریوں پر قیامت برپا ( پہلو ۔۔۔۔۔ صابر مغل )-،-

sab

صابر مغل

جنوبی مقبوضہ کشمیر میں ضلع پلوامہ کے علاقہ باکری پورہ میں سیکیورٹی فورسز نے کیمیکل استعمال کرتے ہوئے رہائشی عمارت کو زمین بوس کر دیا جس کے نتیجہ میں2 کشمیری مجاہدین شہید ہو گئے ،بھارتی فورسز نے دعویٰ کیا ہے کہ مصدقہ اطلاع پر کئے گئے اس آپریشن میں سیکیورٹی فورسزکے55راشٹریہ رائفلز ،سی آر پی ایف کی 182اور183بٹالین سے وابستہ اہلکاروں ،جموں کشمیر پولیس کے اسپیشل سروسز گروپ (ایس او جی) نے حصہ لیا جس میں لشکر طیبہ کے ڈویژنل کمانڈر یا کشمیر چیف ۔ابود وجانہ ۔کو دو ساتھیوں سمیت شہید کر دیا گیا ہے،جموں کشمیر پولیس کے سربراہ ڈاکٹر شیش پال ،کشمیر کے آئی جی منیر احمد کے مطابق 27سالہ ابود وجانہ کی ہلاکت پولیس اور سیکیورٹی فورسز کی بہت بڑی کامیابی ہے حکومت نے ابودوجانہ کو۔اے پلس پلس ۔کٹیگری میں رکھتے ہوئے اس کے سر کی قیمت 15لاکھ مقرر کی تھی ،ریاستی پولیس کا کہنا ہے کہ ابودوجانہ کا تعلق پاکستان کے شمالی علاقے گلگت بلتستان سے ہے جو گذشتہ کئی سالوں سے جنوبی کشمیر میں مسلح کاروائیوں میں ملوث تھا،وادی میں ابودوجانہ کو لشکر طیبہ کے کمانڈر عبدالرحمان عرف ابو قاسم کا نائب قرار دیا جاتا تھا جو2005میں شہید ہو گیا جس کے بعد ابودوجانہ ہی کمانڈر تھا،بے گناہ کشمیری نوجوانو ں ابودجانہ اور اس کے ساتھی عارف نبی ڈار عرف رحمان ولد غلام نبی سکنہ للہارکی شہادت کی اطلاع ملتے ہی جنوبی کشمیر کے تقریباً تمام علاقوں میں لوگ گھروں سے نکل آئے اور سخت احتجاج کیا اور بڑے پیمانے پر مظاہرے بھڑک اٹھے،کاکا پورہ،نیوا اور ہکی پورہ میں بھارتی فورسز نے فائرنگ ،شیلنگ ،لاٹھی چارج اور پیلٹ گنوں کے بے دریغ استعمال کیا جس سے کشمیری نوجوان فرودوس احمد بٹ کے علاوہ مشتاق احمد نامی شہری شہید ہو گئے،سری نگر کے امر سنگھ کالج ،ایس پی کالج،اسلامیہ کالج اور کشمیر یونیورسٹی کے علاوہ دیگرکپواڑہ اور کولگام میں بھارتی فورسز اور طلباء کے درمیان شدید جھڑپیں ہوئیں جس کے نتیجہ میں طالب علم عقیل احمد بٹ جو بعد میں زخموں کی تاب نہ لا کر شہید ہو گیا جبکہ فیاض احمد پیلٹ گن کی وجہ سے ایک آنکھ کی بینائی سے محروم ہو گیا، ،کشمیری حریت پسندوں سید علی گیلانی ،میر واعظ عمر فروق اور یسین ملک نے نوجوان اور بے گناہ کشمیری کی شہادت ،پلوامہ میں بے گناہ افراد پر ہسپتال میں داخل ہو کر تشدد ،کشمیریوں کے گھروں میں مسلسل چھاپے ،لاٹھی چارج کے ذریعے نہتے شہریوں پرتشدد،نوجوانوں کی گرفتاری ،کریک ڈاؤن ،سرچ آپریشن اور عام شہریوں کو نشانہ بنانے کے خلاف مقبوضہ کشمیر میں احتجاج کی کال دی توان رہنماؤں کی اپیل پر بدھ کو پوری وادی میں مکمل شٹر ڈاؤن ہڑتال،سڑکوں پر گاڑیوں کی آمدورفت معطل ،کاروبار زندگی معطل ہو کر رہ گیا،سری لنکا سمیت ساری داوی میں کشیری قوم سراپا احتجاج، احتجاجی مظاہروں کو دیکھ کر قابض انتظامیہ نے تمام تعلیم اداروں کو بھی بند کر دیاوادی مقبوضہ کشمیر میں مکمل ہڑتال رہی پہلے کی طرح ریل سروس،انٹر نیٹ اور موبائل سروس بھی بند،مجاہد کمانڈر برہان وانی اور پھر سبزراحمد بٹ کی شہادت کے بعد وادی میں جدو جہد آزادی کی تحریک میں نیا جوش جذبہ دیکھنے میں آیا ہے وہیں ضد اورہٹ دھرمی پر اتری حکومت ریاستی طاقت کے استعمال اور ظلم و ستم میں بھی بے پناہ اضافہ کر تے ہوئے مجاہدین کے نام پر نہتے کشمیریوں کا خون بہانے پر اتر آئی ہے ،صرف گذشتہ ایک ماہ کے دوران33بے گناہ کشمیری بھارتی ظلم کی بھینٹ چڑھے جبکہ حریت قیادت کو جھوٹے اور بے بنیاد مقدمات کی آڑ میں وفاقی تحقیقاتی ادارے ۔این آئی اے ۔کے ذریعے جیلوں میں ڈالنے کا نیا سلسلہ شروع کر دیا گیا ہے،وفاقی حکومت نے گڈز اینڈ سروسز ٹیکس بل کی منظوری کے بعد جموں و کشمیر کی مالی خود مختاری تقریباً ختم کر دی ہے، پوری وادی میں ظلم و ستم اور جبر،مار دھاڑ ،تشدد سے عبارت پالیسیوں کا مقصد کشمیریوں کی حق پر مبنی جدوجہد کو دبانا ہے اسی وجہ اس اس جنت نظیر خطے میں سیاسی بے یقینی ،بد امنی ،عدم استحکام کی فضا عروج پر ہے،موجودہ حالات میں دنیا بھر میں یہ وہ واحد جگہ ہے جہاں اس قدر ریاستی جبر اور مظالم ہو رہے ہیں مگر ۔انسانیت کے علمبردار ۔خاموش ہیں یہاں تک کہ عالم اسلام نے بھی کشمیریوں پر دن رات ہونے والے مظالم پر آنکھیں موند رکھی ہیں ،جس طرح حریت پسند رہنماؤں کو نیشنل ایویسٹی گیشن ایجنسی کے ذریعے غیر ملکی فنڈنگ کے نام پر پابند سلاسل کیا گیا ہے اسی طرح ایک اور نئی اور خوفناک پالیسی کے ذریعے دنیا کی توجہ اپنی جانب مبذول کرانے ،کشمیریوں پر مظالم کی نئی اور بڑی لہر کے آغاز اور پاکستان کو بدنام کرنے کے لئے انڈیا بہت جلد کشمیر میں خود ساختہ دہشت گرد کاروائیوں میں ۔داعش اور طالبان ۔کی سرگرمیوں کو منسوب کر ے گا،اس موجودہ صورتحال پر پاکستانی دفتر خارجہ کے ترجمان نفیس زکریا نے عالمی برادری سے کہا ہے کہ وہ بھارت کو مقبوضہ کشمیر میں خون ریزی بند کرنے پر مجبور کرے اور یہ مسئلہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قرار دادوں کے مطابق حل ہو اسی سے اس خطے میں امن واستحکام پیدا ہو سکتا ہے، دوسری طرف پاکستان میں دنیا بھر میں کشمیریوں کے سب سے بڑے حمایتی ،درد مند ،جن کا مقصد زندگی ہی کشمیریوں کے حق خود ارادیت کا حصول ہے وہ ہیں حافظ محمد سعید جنہیں حکومت پاکستان نے 6ماہ بعدمزید دو ماہ کے لئے نظر بند کر دیا گیاہے،