-،-قومی سیاست بلیم گیم کی متحمل نہیں ہوسکتی۔محمدکامران -،-
سیاستدان باہمی سیاسی تنازعات کوذاتی عداوت بنانے سے گریز کریں

مووآن پاکستان کے مرکزی چیئرمین محمدکامران میاں نے کہا ہے کہ قومی سیاست بلیم گیم کی متحمل نہیں ہوسکتی،ہرفریق سیزفائر کرے ۔سیاسی قیادت فوری طورپر ایک متفقہ قومی ضابطہ اخلاق تیارکرے اوراس کی پاسداری یقینی بنائے۔سیاستدانوں کی بدنامی سے عوام کاسیاست اورجمہوریت پرسے اعتماداٹھ جائے گا ۔ خداراہمارے سیاستدان باہمی سیاسی تنازعات کوذاتی عداوت بنانے سے گریز کریں۔خواتین کے پیچھے چھپ کرایک دوسرے پرسیاسی حملے نامناسب ہیں۔سیاسی قیادت کی طرف سے ایک دوسرے کے میڈیا ٹرائل سے مادروطن کادشمن ملک خوش ہورہا ہے۔ ریاست،معیشت اورجمہوریت کی مضبوطی کیلئے سلجھی ،نظریاتی ،اصولی اورتعمیری سیاست ناگزیر ہے ۔ وہ مووآن پاکستان پروفیشنل ونگ کے عہدیداران اورکارکنان سے خطاب کررہے تھے ۔محمدکامران میاں نے مزید کہا کہ سیاسی قیادت سنجیدگی،برداشت،فہم وفراست اوربردباری کامظاہرہ کرے ،بچوں کی تعلیم وتربیت پرمنفی اثر پڑرہا ہے ۔سیاسی رواداری اورصبروتحمل کادامن ہاتھ سے نہ چھوڑا جائے۔سیاستدان ایک دوسرے پربہتان تراشی کرنے کی آڑمیں پاکستان کوبدنام کررہے ہیں۔پاکستان کے آئینی اوردفاعی ادارے اپنا کرداراداکررہے ہیں۔پاک فوج کے سپہ سالار جنرل قمرجاویدباجوہ نے درست کہا ”کوئی قانون سے ماورا نہیں”۔آزاد عدلیہ نے فیصلہ دے دیا ،تنقید اورتوہین سے تصادم ہونے کاخطرہ ہے۔ سیاستدان ایک دوسرے کے اندازسیاست ،منشوراورایجنڈے پرتنقید کرسکتے ہیں مگر کسی کودوسرے کی تضحیک کرنے کاحق نہیں پہنچتا ۔انہوں نے کہا کہ اگرسیاسی قیادت قومی سیاست کوپراگندہ کر ے گی تو دوسرے سیاستدانوں کااحترام کیا خاک کریں گے۔مووآن پاکستان جمہوری قوتوں کے درمیان پل کاکردار کرنے کیلئے تیار ہے ۔