-،-جمہوریت کو منفی طرز سیاست سے خطرہ ہے-،-
سیاسی مخالفین کیخلاف خواتین کاکندھااستعمال کرنیوالے کردار ہوش کریں

مووآن پاکستان کی مرکزی سیکرٹری جنرل روحی کھوکھر ایڈووکیٹ نے کہا ہے کہ جمہوریت کو مٹھی بھرسیاستدانوں کے منفی طرزسیاست سے خطرہ ہے۔غیرسنجیدہ سیاستدا ن ایک دوسرے کی آڑ میں جمہوریت اورسیاست کی بدنامی کے درپے ہیں۔ سیاسی مخالفین کیخلاف خواتین کاکندھااستعمال کرنا افسوسناک اورشرمناک ہے،ایساکرنیوالے کردار ہوش کریں۔حسد کے مارے کچھ لوگ اپنے سیاسی انتقام کی آگ بجھانے کیلئے قومی حمیت کاجنازہ نکال رہے ہیں۔قومی سیاست کومذاق بنانیوالے اورایک دوسرے کامذاق اڑانے والے قومی مجرم ہیں۔ جمہوری قوتوں کے درمیان تناؤ اورتصادم کاماحول کسی کوفائدہ نہیں دے گا۔سیاستدان آئینی اداروں سے گلے شکوے اور ایک دوسرے کی عزت اچھالنا بندکریں۔ سیاسی قیادت کواپنااپناقبلہ درست کرنے کی ضرورت ہے ۔سیاسی انتقام کی آگ بجھانے کیلئے عورت کواستعمال اوراس کااستحصال کیاجارہا ہے ۔عورت خودمضبوط ہوتوکوئی ا س کافائدہ نہیں اٹھاسکتا۔کوئی عورت سیاسی چالبازیوں کی آڑ میں چند کوڑیوں کے عوض عورت ذات کوبدنام کرنے کاحق نہیں رکھتی ۔قیام پاکستان کی طرح استحکام پاکستان کیلئے بھی خواتین قومی سیاست کاہراول دستہ ہیں ،انہیں سیاسی سرگرمیوں سے آؤٹ نہیں کیاجاسکتا۔مووآن پاکستان کی قیادت نے جماعت کے اندرہرسطح پر خواتین کوان کاجائزمقام دیا ۔ مووآن پاکستان شعبہ خواتین کے نمائندہ کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے روحی کھوکھر ایڈووکیٹ نے مزید کہا کہ پی ٹی آئی کی خواتین نے اپنے پارٹی چیئرمین عمران خان کے ساتھ اظہاریکجہتی کرتے ہوئے عائشہ گلالئی کی چارج شیٹ کومستردکردیالہٰذاء اس متنازعہ معاملے پرمزیدپوائنٹ سکورنگ نہ کی جائے۔عائشہ گلالئی قومی سیاست میں سرگرم خواتین کی دوست یا ہمدرد بلکہ دشمن ہیں ، عائشہ گلالئی نے اپنے سیاسی مقاصد کی تکمیل نہ ہونے پر جو شرانگیزشوشہ چھوڑا اس کے بعد خواتین سیاسی کارکنان کاگھروں سے نکلنا دشوار ہوجائے گا۔انہوں نے کہا کہ من گھڑت باتوں کوبنیادبناکرایک دوسرے کامیڈیا ٹرائل اورقومی سیاست کوبدنام کرنیوالے سیاستدانوں کابے رحم محاسبہ کیا جائے ۔ کچھ ناعاقبت اندیش سیاستدان اپنے مخالفین پر سیاسی حملے کرنے کی آڑ میں قومی سیاست کوداغدارکررہے ہیں۔