-،-بھولے کا سوال۔عالمی سازش کیا تھی ؟ ( پہلو ۔۔۔۔۔۔ صابر مغل ) -،-

sab

صابر مغل
وہ ہمارے محلے کا ہی رہائشی، چار بچوں کا باپ اور چائے کاکھوکھا لگا کر گذر بسر کرتا ہے،صبح سے لے کر رات تک اس کی دوکان پر ٹی وی چلتا رہتا ہے اخبار بھی اس نے لگو ارکھا ہے کچھ فارغ ہوتے اخبار ہی پڑ ھتے رہنا،کام کے ساتھ ساتھ سار ا دن وہ آنے والے کاہگوں کے ساتھ سیاسی موضوع پر ہی باتیں کرنا اس کا اصل مشغلہ یا جنون ہے،کئی وہاں آنے والوں کا اصل موضوع سیاست ہی ہوتا ہے جن کی باتوں سے لگتا جیسے پاکستان کے سیاسی حالات کا ان سے بڑھ کر کسی کو کچھ پتا نہیں ،وہ میرا کلاس فیلو تھا اس وجہ سے اکثر بلالیتا گپ شپ میں زیادہ تر اس کا موضوع سیاست ہی ہوتی ،پانامہ کیس کے دوران اس ٹی سٹال پر کئی طرح کی باتیں کانوں میں پڑتیں مگر میں ان کے سیاسی شعور پر ہنس کر آگے نکل جاتا ،البتہ بھولے کا زیادہ تر ایک ہی سوال مجھے ضرور چبھتا رہتا کہ سر جی کرپشن کا کیس تو ہے مگر یہ جو روزانہ سپریم کورٹ یا اس سے ہٹ کر کسی بھی جلسہ یا میڈیا کے ساتھ بات چیت میں ۔عالمی سازش ۔کی گردان لگاتے ہیں اس کا مطلب کیا ہے ؟وہ صرف ایک چائے فروش ہی نہیں بلکہ اس نے گریجویشن کر رکھی تھی غریب گھرانے کا فرد تھا سرکاری نوکری نہ مل سکی گھر یلو معاشی حالات بگڑے تو اس نے باپ کے ساتھ اسی ٹی سٹال پر کام شروع کر دیا ،والدکے انتقال کے بعد اب سارا بوجھ اسی پر تھاتھا الصبح اٹھ کر دکان پر آتا اور رات گئے واپس جاتا ،اس کے اس سوال پر میں ہمہ وقت متحیر رہتا ،سوچتا ہی رہتا کہ میرے وطن میں کیا ہو رہا ہے ؟کوئی بھی عالمی سازش جس میں ہمارے اعلیٰ ترین ادارے بھی شامل ہوں کیسے ممکن ہے؟فیصلہ میاں نوازشریف کی نا اہلی کا آ گیا مگر سازش کی گردان پہلے سے بھی بڑھ گئی ،میں اسے کیا بتاتا کسی بھی سازش کے بارے میں ،کئی دن تک مجھے سے کچھ کہلوانے میں ناکامی کے بعد ایک دن وہ خود ہی بول پْرا،سر جی یہ تو کئی سن رکھا ہے کہ پاکستان میں حکومت یا اقتدار کے حصول کے لئے مجموعی طور پر بیرونی طاقتوں کی ہی مدد لی جاتی ہے میں نے لقمہ دیا بلاشبہ پاکستان میں بیرونی مداخلت حد درجہ رہی ہے، مگر یہ تو کیس ہی کرپشن کا ہے اس میں بیرونی مداخلت کیسے کیسے ممکن ہے ؟لندن میں فلیٹس سے چلنے والی بات آگے بڑھی تو بہت کچھ کھلتا ہی چلا گیا ،وزیر اعظم سمیت کئی وفاقی وزراء کے اقامے نکل آئے اس دوران اس نے کہا ر جی اقامہ تو میرے بیٹے نے بھی لیا ہے جو دوبئی محنت مزدوری کرنے گیا ہے ان بڑے لوگوں کو کیا ضرورت محنت مزدوری کی؟میں خاموش رہا تو وہ پھر گویا ہوا،اس کیس کو ہماری سب سے بڑی عدالت نے سنا،ابتدائی فیصلہ میں پانچ میں سے دو ججوں نے نواز شریف کو صادق اور امین نہ سمجھتے ہوئے ان کے خلاف فیصلہ دیدیا،مگر اکثریتی فیصلہ کی بنا پر6رکنی جے آئی ٹی بنی جس میں پاکستان کے اعلیٰ اداروں کے اعلیٰ افسران شامل تھے،کیا ہماری عدلیہ بیرونی ڈکٹیشن پر کام کرتی ہے؟کیا ہماری فوج جس کے نمائندے بھی جوائنٹ انویستی گیشن ٹیم میں شامل تھے وہ بھی کسی بیرونی دباؤ میں آکر عالمی سازش کا شکار ہو گئی ؟متاثرہ فریق اگر یہ کہتا کہ یہ جج ذاتی طور پر ان کے خلاف ہیں تو بندہ مان لیتا ہے شاید ایسا ہو مگر سوال توکسی بھی ۔عالمی سازش۔کا ہے جس کے نتیجے میں ہماری جمہوری حکومت کو ختم کیا گیا ،میں اس کی اس قدر گہرائی سے لبریز سوچ پر خود کسی اور سوچ میں پہنچ گیا،بات تو۔بھولا۔ٹھیک ہی کر رہا تھا کہااگر کسی بھی عالمی سازش کا مہرہ ہماری عدلیہ ،فوج اور دیگر قومی ادارے بن سکتے ہیں تو پھر یہاں ہمارا ہے کیا؟کوئی یہ بتانے کو تیار نہیں کہ وہ سازش تیار کس نے کی ؟اسے پاکستان میں لانچ کس نے کیا؟پاک فوج اور اعلیٰ ترین عدلیہ کو کیسے خریدا گیا؟کیسے ان سے اپنی مرضی کا فیصلہ لکھوایاگیا؟جے آئی ٹی نے کیسے من و عن ان کی مرضی کے مطابق رپورٹ تیار کی؟اگر خدانخواستہ ایسا ہو چکا ہے تو پھر سازش سازش کا راگ الاپنے والے اتنے ہی خوف زدہ ہیں کہ اگر عالمی سازش کا اصل راز کھول دیا تو انہیں پھانسی پر لٹکا دیا جائے گا؟پھر ہماری خودی۔حق خود ارادیت وغیرہ سب کہاں ہے؟مقبوضہ کشمیر میں قیامت خیز زندگی گذارنے والے تو اپنے حق خود ارادیت اور آزادی کے لئے ہمیں ہی پہلی اور آخری امید سمجھتے ہیں اور اگر ہم خود ہی ۔مہرے۔ہیں تو انہیں کیوں دھوکے میں رکھا جا رہا ہے؟ہمارے نزدیک عمران خان کو یہ کریڈٹ ضرور جاتا ہے کہ اس نے کرپشن بے نقاب ہونے پر آخر تک اس کا پیچھا کیا اور ہاں اگر وہ کرپٹ نکلتا ہے یا اس میں کوئی فالٹ ہے تو اسے بھی بھگتنا چاہئیں،چیر میں سینٹ اور بعض سابق اور اب پھر سے تروتازہ وفاقی وزراء (بعض کو سپریم کورٹ کے باہر عدلیہ پر تنقید کا انعام) نے اسے58۔ٹو بی کا متبادل قرار دے رہے ہیں اگر واقعی ایسا ہے تو پھر ملک سے عدلیہ کا نظام ہی اکھاڑ پھینکا جائے ،پاکستان عوام جو 70برس سے دنیا کے بد حال ممالک کی عوام کی طرح زندگی گذار رہی ہے جس کی اکثریت بھوکی سوتی ہے ،وہ اس معاملے میں فریقین سے بھی آگے ہیں ،سوشل میڈیا پر وہ واہیات تصاویر پوسٹ کی جاتی ہیں جیسے یہ سب مسئلہ کسی اشرافیہ کا نہیں ان کے گھر کا ہے،نعرے لگانے والوں کو کبھی کسی سے ہاتھ ملانا بھی نصیب ہوا ؟بھولاجی یہاں کیا سازش ہونی ہے ہماری فوج پیشہ وری لحاظ سے دنیا کی نمبر ون فوج ہے ،ہماری عدلیہ کبھی ۔نظریہ ضرورت۔ کی حد تک تو ضرور گئی ہے مگر یہ تصور ہی بڑا گھٹیا اور بد بودار ہے کہ وہ کسی بھی عالمی سازش کا حصہ ہوں گے یا اسے یہاں پنپنے دیں گے، یہاں کی عوام جن سے ۔لتر۔کھاتی ہے انہیں ہی ووٹ دیتی ہے،انہی کے آگے بھنگڑے ڈالتی ہے،انہی کے نعرے لگاتی ہے ،ان بھوکوں کے پاس بس یہی ہے وہ میرا لیڈر وہ تیرا لیڈراور لیڈر ایسے کہ جن سے ملنا عام عوام کیا ممبران پارلیمنٹ کے لئے کبھی کبھار ناممکن ہوتا ہے، بھولے کاسوال اپنی جگہ بہت اہم ہے اور جو ہر ذی شعور پاکستانی کے ذہنوں میں گونج رہا ہے مگر یہاں رقص کرنے والے حکمرانوں کا دماغ ٹھیک ہونے دیں تو وہ عوام کو سوچیں ،ان کے نزدیک تو سب اچھا ہے ،ناچتے رہو اور خوب ناچو پاکستانیو ںیہ بھولے کا پیغام ہے ،الراقم بھولے سے ملنے کے بعد گھر لوٹ آیا اور ساری رات عجب اقسام کی سوچوں میں غرق جاگتا رہا۔