۔،۔میانمار ،روہنگیا مسلمانوں کے قتل عام ،ساری دنیا تماشہ دیکھ رہی ہے۔،۔

شان پاکستان ینگون میانمار۔ مقامی اور انٹرنیشنل خبروں سے پتہ چلتا ہے کہ 25اگست 2017سے خانہ جنگی ،انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں اور روہنگیا نہتے مسلمانوں کا قتل عام معمول بن چکا ہے کیونکہ میانمار میں بدھ مت کے پیروکار اکثریت میں ہیں ،اس کے ساتھ ساتھ وہاں کی شمالی ریاست راکھین Rakhinمیں تقریباََ 10لاکھ آبادی مسلمانوں کی بھی ہے ،میانمار حکومت ان لوگوں کو اقلیت کی حیثیت دینے کے لئے تیار نہیں اور نہ ہی وہ قانونی طور پر میانمار کے شہری تصور کئے جاتے ہیں اسی لئے میانمار حکومت کی جانب سے راکھین میں آئے دن مسلمانوں کے قتل عام اور انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کی خبریں آتی رہتی ہیں،البتہ اس حوالہ سے اقوام متحدہ سمیت ساری دنیا کا ردِ عمل آگے نہیں بڑھ پایا ، حکومت کا کہنا ہے کہ روہنگیا عسکریت پسندوں نے قتل عام کیا ہے فوج نے بیشتر حملہ آوروں کو ہلاک کر دیا ۔ عالمی خبر رساں ایجنسی روئٹرز Reutersنے میانمار حکومتی ذرائع کی جاری کردہ رپورٹ کے مطابق صرف 2روز میں 104نہتے مردوں عورتوں اور بچوں کو ہلاک کر دیا۔

1