۔،۔ادارہ منہاج القرآن نے سال باوُ زنارتھ ویسٹ میں اجتماعی عید کا اہتمام کیا ۔نذر حسین-،-

N.Hussain
نذر حسین
شان پاکستان جرمنی فرینکفرٹ نذر حسین۔ 65 برس کی عمر میں ابراہیم ؑ دعا کرتے ہیں یا اللہ مجھے نیک اولاد دے دے،نیک اولاد ملی 84 سال کی عمر میں اللہ تعالی نے بیٹا دیا،بڑھاپے کی اولاد تو دل کو پکڑ لیتی ہے ،چند دن نہیں گزرے کے حکم ہوا جاوُ چھوڑ کے آوُ ، کہاں چھوڑ کے آوُں جبرائیل آئے گا اور تمہیں راستہ بتائے گا، جبرائیلؑ انسانی شکل میں آئے یہ بتانا ضروری ہے کہ جبرائیل براق پر نہیں بلکہ انسانی شکل میں اونٹنی پر سوار تشریف لائے ،ابراہیم ؑ اونٹنی پر بچہ اور بیوی اونٹنی پر سوار ہو کر چل دیئے، یہ قافلہ فلسطین سے چلا اور چلتے چلتے مکہ کے کالے پہاڑوں کے وسط میں پہنچ گئے جہاں خشکی نہ پانی نہ سایہ اللہ کا حکم ہوا یہاں چھوڑ دو اُس وقت بیت اللہ ایک ٹیلے کی شکل میں تھا ، ابراہیم ؑ جو آگ میں ڈلتے ہوئے نہیں گھبرائے، سن کر گھبرا گئے یہاں تو کچھ نہیں ہے بیوی بچے کو کیسے چھوڑ دوں،جبرائیل نے کہا کہ اللہ کی منشا ہے کہ اس بچے کو یہیں پر چھوڑ دیں ، ابراہیم ؑ واپس چل پڑے،حضرت ہاجرہ حیران پریشان کہا ں اور کیوں چھوڑ کر جا رہے ہو ،تین میل چلتی رہی کوئی جواب نہ ملا،تین میل کے بعد یاد آیا یہ تو اللہ کے نبی ہیں پھر پوچھا یہ اللہ کا حکم ہے کہا ہاں یہ اللہ کا حکم ہے کہا جاو اللہ مجھے ضائع نہیں کریں گے ،اس طرح بنیا د رکھی جب وہ بڑے ہو گئے کہا جاوُ ذبح کرو جب آپ عمر کے 94 سال میں تھے،فلسطین سے چلے مکہ وہ بھی بچہ ذبح کرنے ان کو تیار کروایا وادی منہ میں پہنچے تو کہا بیٹا تمہیں میں اللہ کی رضاء کے لئے ذبح کرنا چاہتا ہوں ،بیٹے نے کہا آپ کر دیں جو کرنا ہے ،آپ کے بدلے میں مجھے اللہ ملے گاوہ آپ سے بہتر ہے اور دنیا کے بدلے میں جنت ملے گی وہ دنیا سے بہتر ہے ،پھر بچے نے کہا ابَا میرے ہاتھ باندھ دینا ، اُلٹا لٹانا ، آنکھوں پر پٹی باندھ لینا ،اپنا کرتہ اتار کر کہا یہ میری اماں کو نشانی کے طور پر دے دینااور اپنے کرتے میں مجھے کفن دے کر ادھر دفن کر دیناِ ،حضرت ابراہیم ؑ نے اللہ کا نام لے کر چھری پھیر دی جب آنکھوں سے پٹی اتاری تو ایک چھترا ذبح پڑا تھا ، اس وقت کیا عالم ہو گا جب اللہ کا نبی اللہ کی رضا حاصل کرنے کے لئے بیٹے کی گردن پر چھری پھیر رہا ہو ۔ عید ایک خوشی کا موقع ہے اور خوشی کے موقع پر خوش ہونا عین عبادت ہے،اللہ تعالی نے انسان کی تخلیق کی اور وہی اس کی ضروریات کو سب سے زیادہ بہتر جانتا ہے ، انسان مختلف چیزوں کا مجموعہ ہے ، انسانی زندگی کے کئی پہلو ہیں، انسان جہاں جسم رکھتا ہے وہاں اس کی روح، عقل اور اس کے جذبات بھی اس کی زندگی میں بہت معنی رکھتے ہیں ، ایک معتدل زندگی ، خوبصورت زندگی ہو سکتی ہے جس میں ان چاروں صورتوں اور ان چاروں پہلوں کے تقاضے پورے کئے جائیں،جہاں جسم کی ضروریات کا خیال رکھنا ہوتا ہے وہاں روح کے بھی کچھ تقاضے ہوتے ہیں ،اسی طرح جہاں ہم اپنی عقل کو جِلا بخشتے ہیں ،ایسے کام کرنے سے جس کے ذریعہ عقل کی نشو نما ہو سکے ،عقل ترقی کر سکے وہاں اس کے ساتھ ساتھ جذیات کی خوبصورتی کو بھی مد نظر رکھنا ہے ، ہمارے دین میں ان چاروں چیزوں کی رعایت رکھی گئی ہے جن کے بارے میں واضح ہدایات موجود ہیں، عید کا موقع اگرچہ ہمیں ایک اہم واقعہ کی یاد دلاتا ہے اور خاص طور پر عید الاضحی کا موقعہ لیکن اس موقعہ پر خوشی منانا ، اللہ کے حضور قربانی کرنے کے ساتھ ساتھ خوشی کا اظہار کرنا بھی ضروری ہے انہی دین کے تقاضوں کوپورا کرنے کے لئے آج نہ صرف فرینکفرٹ بلکہ جرمنی کے بہت سے شہروں، گاوں سے اہل اسلام کام کا دن ہونے کے باوجود نماز عید پڑھنے فرینکفرٹ کے سب سے بڑے ہال سال باو نارتھ ویسٹ ٹیٹوسFrankfurt am Main: SAALBAU Titus-Forum (Nordweststadt)میں تشریف لائے، ادارہ منہاج القرآن انٹرنیشنل فرینکفرٹ سال میں دو دفعہ عید کے موقع پر ہال کرائے پر لے کر اہتمام کرتے ہیں ،اس سال بھی ہال کھچا کھچ بھرا ہوا تھا عورتیں بچے بوڑھے ہال کے اندر اور باہر رنگ برنگے کپڑے پہنے گھومتے نظر آ رہے تھے، نہ صرف پاکستانی کمیونٹی بلکہ افریقی ،ترکی دوسرے ممالک کے افراد بھی عید کی نماز میں شرکت کے لئے تشریف لائے جبکہ جرمن کمیونٹی حسرت بھری نگاہوں سے مسلمانوں کو دیکھ رہے تھے کہ اتنے پیارے کپڑے چھوٹے بڑے خوشی خوشی آ رہے تھے نماز عید کے بعد نہ صرف پاکستانی بلکہ دوسرے ممالک کے مسلمان بھی ہال کے ساتھ موجود دکانوں اور سٹوروں سے خریداری کرتے نظر آتے ہیں۔ ہمیشہ کی طرح بہترین انتظام پر انتظامیہ ادارہ پاک منہاج القرآن انٹرنیشنل فرینکفرٹ مبارک باد کی مستحق ہے کہ اس دفعہ محترم حافظ و قاری محمد اجمل قادری اور انتظامیہ نے نماز وقت مقررہ پر کھڑی کر دی ، نماز کے بعد دیر تک حاضرین ایک دوسرے سے گلے ملتے رہے ،عورتیں بھی دیر تک ملنے ملانے میں مشغول رہیں ،خواتین کی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ ایسی محافل میں دور دراز سے آنے والی فیملیز کے ساتھ روابط کا بہترین ذریعہ ہے محفل کے اختتام پر حاضرین کے لئے ریفریشمنٹ کا اہتمام کیا گیا تھا، نارتھ ویسٹ شاپنگ سینٹر میں مسلمان ہی مسلمان گھومتے نظر آ رہے تھے۔

butt edm

IMG_3498 IMG_3520

IMG_3485 IMG_3486 IMG_3487 IMG_3488 IMG_3489 IMG_3490 IMG_3492 IMG_3497 IMG_3500 IMG_3501 IMG_3502 IMG_3512 IMG_3527 IMG_3528 IMG_3529 IMG_3530 IMG_3534 IMG_3535 IMG_3538 IMG_3541 IMG_3559 IMG_3560 IMG_3561 IMG_3562 IMG_3563 IMG_3565 IMG_3567 IMG_3569 IMG_3570 IMG_3571 IMG_3573 IMG_3574 IMG_3576 IMG_3578 IMG_3583 IMG_3585 IMG_3590 IMG_3602 IMG_3605 IMG_3608 IMG_3610 IMG_3617 IMG_3618 IMG_3620 IMG_3621 IMG_3622 IMG_3623 IMG_3624 IMG_3625 IMG_3626 IMG_3628 IMG_3631 IMG_3637 IMG_3640 IMG_3642 IMG_3645 IMG_3648 IMG_3649 IMG_3651 IMG_3655 IMG_3657 IMG_3662 IMG_3663 IMG_3667 IMG_3668 IMG_3672