۔،۔اسلام کی بقاء و ارتقاء کی ضمانت ،شہادت امام حسینؓ ،ڈاکٹر حسین محی الدین قادری کی زبانی۔،۔نذر حسین

huss
نذر حسین
شان پاکستان جرمنی فرینکفرٹ۔ جرمنی کے شہر فرینکفرٹ کے ایئر پورٹ پرنہ صرف ادارہ منہاج القرآن فرینکفرٹ بلکہ اٹلی، فرانس، عینی پرتال، برلن یہ کہنا درست ہو گا کہ یورپ تو یورپ بلکہ چین سے بھی ایک نوجوان ۔ڈاکٹر حُسین محی الدین قادری ۔کو خوش آمدید کہنے کے لئے ایئر پورٹ پر تشریف لائے ہوئے تھے،ایئر پورٹ پر موجود افراد نے ڈاکٹر صاحب کی آمد پر والہانہ استقبال کیا، عنصر بٹ صاحب نے ظہرانہ دیا اس طرح یہ قافلہSaalbau Northwest پہنچا ، ادارہ منہاج القرآن انٹرنیشل فرینکفرٹ نے پیغام امام حسینؓ کانفرنس کا سال باوُ نارتھ ویسٹ فرینکفرٹ میں خوبصورت اہتمام کیا جس میں خصوصاََلخت جگر شیخ الاسلام پروفیسرڈاکٹر محمد طاہر القادری ،ڈاکٹر حسین محی الدین قادری نے شرکت کی اور ایمان افروز خصوصی خطاب فرمایا، ہمیشہ کی طرح اپنے شعارانہ انداز سے راجہ وحید نے نظامت سنبھالی ، نعت خواں حضرات نے اپنی پیاری پیاری نعتیں سنائیں، خطیب و امام مسجد اقبال مدثر صاحب نے اپنے انداز سے شہادت امام حُسینؓ کا ذکر کیا ڈاکٹر حسین محی الدین کی آمد پر حال میں کثیر تعداد میں موجود حضرات نے ان کا والہانہ استقبال کیا حال میں داخل ہونے پر محمد اقبال خان نے جگر گوشہ شیخ الاسلام کے لخت جگر ڈاکٹر حسین محی الدین کو خوش آمدید کہا ماریا اقبال خان نے مہمان خصوصی کو پھولوں کاگلدستہ پیش کیا ، بغیر تاخیر کے ڈاکٹر صاحب نے شہادت امام حسین کانفرنس سے خطاب کیا ،انہوں نے دلی طور پر نہ صرف فرینکفرٹ بلکہ یورپ میں موجود تمام تنظیموں کا شکریہ ادا کیا ،خصوصاََ حال میں موجود خواتین و حضرات کا شکریہ اداکیا جو اتنی مصروف زندگی ہونے کے باوجود محفل کو اور بھی نورانی بنانے کے لئے تشریف لائے تھے۔ امام ترمزی نے نقل کیا وہ بیان کرتے ہیں کہ حضرت امر بن علی سلمہ سے مروی ہے کہ آقا کائنات ﷺ حضرت اُم سلمہ کے گھر موجود تھے تب یہ آیت مبارکہ نازل ہوئی(اِنَمَا یُریدُاللہُ) اے اہل بیت اللہ تو یہی چاہتا ہے کہ تم سے ہر طرح کی آلودگی کو دور کر دے اور تمہیں خوب پاک و صاف کر دے*آقا و مولی حضرت محمد مصطفی ﷺ سیدہ فاطمہ الزہراہ علیہ السلام، سید نا امام حسنؓ ، سیدنا امام حسینؓ کو بلایا اور انہیں ایک ساتھ اپنی کمبلی مبارک میں ڈھانپ لیا اور مولا علی شیر خُدا ،تاجدار کائناتﷺ کے پیچھے کھڑے تھے آپﷺ نے انہیں بھی اپنی کمبلی مبارک میں داخل کر لیا۔پھر اللہ رب العزت کی بارگاہ میں دست دعا بلند فرمائے اور فرمایا یا الہی یہ میرے اہل بیت ہیں ان سے ہر آلودگی کو دور کر دے۔ پھر فرمایا فاطمہ الزہرا بیت رسولﷺ سے تھیں پھر ضروری تھا رشتہ اس سے ہو جو بیت اللہ سے ہو اسی لئے مولا علی شیر خُدا کو مولود کعبہ بنایا گیا نسبت دی گئی ادھر مولا علی شیر خُدا کی ولادت کعبہ کے اندر ہوئی ادھر فاطمہ الزہرا مصطفی کے گھر سے آئی ، ایک اور جگہ حضرت انس بن مالکؒ واقعہ کی تفصیل بیان کرتے ہوئے فرماتے ہیں رسول اکرمﷺ مسجد میں تشریف فرما تھے آپﷺ نے حضرت علی سے فرمایا یہ جبرائیل ہے مجھے بتا رہا ہے اللہ نے فاطمہ سے تمہاری شادی کر دی ہے اور تمہاری شادی پر چالیس ہزار فرشتوں کو گواہ کے طور پر مجلس نکاح میں شامل کیا گیا اور شجر طوبی سے فرمایا ان پر موتی اور یاقوت نچھاور کرو جو نکاح میں شریک فرشتے ایک دوسرے کو قیامت تک ایک دوسرے کو بطور تحفہ دیں گے۔لہذا حکم ہوا اب فرش پر بھی اس مجلس کا انعقاد کریں تب حضور نے وہ نکاح کیا ،ڈاکٹر صاحب نے اپنے علم کی نگاہ سے ارشاد فرمایا جب یہ دو سمندر ’دریا‘ ۔مَرج البَحرینِ یَلتَقِین۔بحر علیؓ اور بحر طہارت فاطمہ الزہرا اس رشتہ نکاح کے ذریعہ آپس میں ملے تو ان میں سے دو موتی نکلے ۔لُو لُوُ وَالمَرجَان ۔ایک لُو لُو اور دوسر وا لمرجان کہلایا۔ ایک وہ موتی لُو لُو نکالا جس میں سبز جھلک نظر آتی ہے دوسرا موتی وَالمَرجَانجس میں سرخ رنگ نمایاں ہے سبز موتی سے مراد امام حسن مجتبی ہیں جبکہ مرجان کی سرخیکا اشارہ خُن حسین کی طرف ہے جو میدان کربلا میں راہ خدا میں بہایا گیا ۔حضرت عبداللہ ابن عباس روایت کرتے ہیں ایک دن حضورﷺ کی دائیں ران مبارک پر شہزادہ امام حسینؓ بیٹھے تھے دوسری طرف ران مبارک پر شہزادہ ابراہیم بیٹھے سھے اسی اثنا میں سیدنا جبرائیل امین حاضر ہوئے اور آ کر عرض کی یا رسول اللہ اللہ پاک نے آپ پر سلام بھیجا ہے اور فرمایا کے اے میرے حبیب دونوں شہزادے آپ کے پاس نہیں رہ سکتے ایک دے دیں اور ایک رکھ لیں، اللہ اللہ وہ کیسا منظر ہو گا ، حضور اکرم ﷺ نے جبرائیل کا یہ پیغام سن کر ایک نگاہ امام حسین کی طرف کی پھر ایک نگاہ اپنے لخت جگر ابراہیم کی طرف کی حضور رو پڑے اور چشمان مقدس سے وآنسووں کی لڑی جاری ہو گئی ، حضور کے دل پر کیا گذری ہو گی اس کے بعد ضبط کر کے حضور نے فرمایا اگر ابراہیم کو دیتا ہوں تو اس کی وفات پر صرف میں ہی آبدبدہ ہوں گا اگر حسین کو دیتا ہوں تو اس کے جانے پر میں تو رووں گا ہی مگر میری فاطمہ بھی روئے گی ۔اپنا رونا گوارہ کر لوں گا فرمایا ابراہیم کو لے جاو اور حسین مجھے دے دو، جناب ابراہیم کا فدیہ کر دیا اور امام حسین کو رکھ لیا اس میں بھی حکمت کار فرما تھی کہ امام حسین سے اسلام کو پناہ ملنا تھی اور اسلام نے خون حسینی سے سرخروئی اور کامیابی پائی، دوران خطاب ہال نعروں سے گونجتا رہا،اختتام پر درود و سلام پیش کیا گیا،شہادت امام حسین کانفرنس کے اختتام پر ڈاکٹر حسین محی الدین قادری نے فرداََ فرداََ تمام مہمانوں سے مصافحہ کیا ، مہمانوں کو بڑے احترام سے لنگر حسینی پیش کیا گیا۔ِ مجلس کے اختتام پر عنصر بٹ نے ڈاکٹر حسین محی الدین قادری کو عشائیہ دیا ،دوسرے روز ان کوہائیڈل برگ ڈاکٹر علامہ اقبال کی رہائش دکھائی گئی اور Iqbal uferاقبال اوفر پر بھی لے جایا گیا۔

_MG_3794 _MG_3805 _MG_3807

IMG_3808 IMG_3809 IMG_3811 IMG_3816 IMG_3815 IMG_3814 IMG_3813 IMG_3817 IMG_3818 IMG_3820 IMG_3822 IMG_3830 IMG_3829 IMG_3828 IMG_3827 IMG_3836 IMG_3833 IMG_3832 IMG_3831 IMG_3837 IMG_3838 IMG_3839 IMG_3841 IMG_3844 IMG_3845 IMG_3847 IMG_3848 IMG_3853 IMG_3852 IMG_3851 IMG_3850 IMG_3854 IMG_3856 IMG_3857 IMG_3862 IMG_3868 IMG_3863

_MG_3869

_MG_3873 _MG_3878 _MG_3882 _MG_3885 _MG_3881 _MG_3879 _MG_3887 _MG_3888 _MG_3890 _MG_3957 _MG_4099 _MG_3980 _MG_3963 _MG_3959 IMG_3893 IMG_3894 IMG_3901 IMG_3899 IMG_3898 IMG_3897 IMG_3902 IMG_3904 IMG_3907 IMG_3912 IMG_3911 IMG_3915 IMG_3914 IMG_3913 IMG_3921 IMG_3922 IMG_3939 IMG_4003 IMG_4025 IMG_4022 IMG_4020 IMG_4018 IMG_4029 IMG_4039 IMG_4040 IMG_4042 IMG_4064 IMG_4052 IMG_4050 IMG_4049 IMG_4065 IMG_4067 IMG_4069 IMG_4071 IMG_4084 IMG_4083 IMG_4080 IMG_4072 IMG_4086 IMG_4087 IMG_4091 IMG_4106 IMG_4108 IMG_4109 IMG_4111 IMG_4115