۔،۔ پاکستان کا نظام تعلیم بھی انتقام کانشانہ بنا ہوا ہے ۔الطاف شاہد۔،۔

shahid
پاک سرزمین پارٹی برطانیہ ویورپ کے صدر چودھری محمدالطاف شاہد نے کہا ہے کہ پاکستان کا نظام تعلیم بھی اشرافیہ کے انتقام کانشانہ بنا ہوا ہے۔شرح خواندگی اورتعلیمی معیارکو تسلی بخش قرارنہیں دیاجاسکتا۔طبقاتی نظام تعلیم نے عام آدمی کواشرافیہ کاغلا م بنادیا،پی ایس پی طبقاتی تقسیم کیخلاف ہے۔صوبوں سے وفاق تک حکمران شہریوں میں آسانیوں کی بجائے دشواریاں کیوں تقسیم کررہے ہیں۔عوام کاپیسہ ان کی مرضی سے ان کی اجتماعی فلاح وبہبودپرصرف کیاجائے۔عام آدمی کے بچوں کو تعلیم اورصحت کی سہولیات فراہم کرناریاست کافرض ہے، ان کاحصول سہل بنایاجائے ۔اگر نوجوانوں کے ہاتھوں سے قلم کتاب بھی چھین لی گئی توخدانخواستہ جہالت کااندھیراانہیں نگل جائے گا ۔پی ایس پی کے بانی ومرکزی چیئرمین مصطفی کمال وزیراعظم منتخب ہوکر دوررس تعلیمی اصلاحات کریں گے۔ مصطفی کمال بحیثیت وزیراعظم اپنے اقتدار کے ابتدائی سال میں تعلیمی انقلاب برپاکردیں گے ۔وہ ایک اعلیٰ سطحی اجلاس سے خطاب کررہے تھے ۔چودھری محمدالطاف شاہد نے مزید کہا کہ قومی لیڈر کی حیثیت سے مصطفی کمال اپنے ہم وطن نوجوانوں ناقص نظام تعلیم کے رحم وکرم پرنہیں چھوڑسکتے ۔علم کی روشنی جہالت اورشدت کے اندھیروں کودورکرسکتی ہے۔انہوں نے کہا کہ ارباب اقتدار کی تعلیمی معاملات سے مجرمانہ چشم پوشی ایک بڑاسوالیہ نشان ہے۔ہمارے نوجوانوں کے روشن مستقبل کاراستہ مادرعلمی سے ہوکرجاتا ہے۔انہوں نے کہا کہ سیاسی ومعاشی استحکام کیلئے تعلیم عام کرنے کی ضرورت ہے ۔پیپلزپارٹی کی صوبائی حکومت نے سندھ میں نظام تعلیم کوتختہ مشق بنا یاہوا ہے ۔انہوں نے کہا کہ چاردہائیوں سے باری باری اقتدار میں آنیوالے حکمران خاندان ڈرتے ہیں اگرعا م آدمی کوتعلیم دے دی تو حصول علم کے بعدوہ اپنے حقوق کاتقاضا اور اسمبلیوں کیلئے موزوں امیدوار منتخب کرے گا۔معاشرے کے عام کوباشعور بنانا پاک سرزمین پارٹی کی سیاست کامحور ہے،ہمارے قائد مصطفی کمال تعلیمی انقلاب کے علمبردار ہیں۔