-،-چین میں ترقی کاسیلاب صنعتی انقلاب سے آیا۔ پروفیسر زاہدہ ملک-،-
پاکستان اوورسیز کی ممتاز علمی ،سماجی ،کاروباری شخصیت اورکالم نگار پروفیسر ڈاکٹر زاہدہ ملک نے کہا ہے کہ چین میں ترقی کاسیلاب صنعتی انقلاب سے آیا ۔لوگ خودانحصاری اور کاروباری سرگرمیوں کیلئے مناسب مواقع کے متلاشی ہیں۔ریاست کوشش کے باوجودہرشہری کوروزگار یاکاروبار کیلئے قرض فراہم نہیں کرسکتی لہٰذاء نجی اداروں کوآگے بڑھناہوگا۔ پاکستان میں مائیکروفنانس کے فروغ کی اشد ضرورت ہے۔ہنرمندمگرکم وسیلہ پاکستانیوں کوان کے پیروں پرکھڑاکرنامعاشی انقلاب کا نکتہ آغاز ہوگا۔پاکستان میں بھی ہرسطح پرانڈسٹری کوفروغ دیاجائے۔خواتین دستکاری مصنوعات کی تیاری سے اپنے خاندانوں کی بھرپور مددکرسکتی ہیں ۔شہریوں کوآسان شرطوں پرقرض کی فراہمی سے جہاں بیروزگاری کاسدباب ہوگاوہاں مجرمانہ سرگرمیوں میں بھی خاطرخواہ کمی آئے گی ۔ مختلف وفود سے بات چیت کرتے ہوئے پروفیسر ڈاکٹر زاہدہ ملک نے مزید کہا کہ پاکستان میں سپورٹس اورسرجری کامعیاری سامان تیارہوتا ہے ،شہریوں نے اپنے گھروں میں مختلف مصنوعات کی تیاری کے یونٹ لگائے ہوئے ہیں تاہم اس کے باوجود کئی ملین افرادکوبیکاری اوربیروزگاری کاسامنا ہے ۔پاکستان میں ایک موثرمائیکروفنانس بنک کاقیام ہمارے ہنرمندوں کیلئے تاز ہ ہواکاجھونکا بن جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ آج جولوگ اپنے خاندانوں کیلئے بوجھ بنے ہوئے ہیں اگرانہیں کاروبار کیلئے سرمایہ فراہم کردیاجائے توان میں سے ہرایک اپنے اپنے خاندان کابوجھ اٹھاسکتا ہے بلکہ اپنے آس پاس کئی بیروزگاروں کوباعزت روزگار کی فراہمی کاوسیلہ بھی بنے گا۔چھوٹی انڈسٹری کے فروغ سے پاکستان کی برآمدات میں خاطرخواہ بہتری جبکہ درآمدات میں کمی آئے گی ۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کامقامی انڈسٹری پرزیادہ سے زیادہ انحصار کرنابیرونی قرض کے بوجھ سے نجات کاسبب بنے گا۔