۔،۔پاکستان جرمن پریس،شان پاکستان جرمنی معصوم زینب کے ریپ اور قتل کی سخت مذمت کرتا ہے۔،۔
vv

نذر حسین
شان پاکستان جرمنی فرینکفرٹ نذر حسین۔ پاکستان جرمن پریس کلب کے صدر جناب سلیم پرویز بٹ،سید رضوان الحسن شاہ ،سید اقبال حیدر، عطا الرحمن اشرف، شجاعت زیدی، سید محسن رضاء شاہ، جاوید بھٹی اور نذر حسین پاکستان قصور میں 7 سالہ بچی سے زیادتی اور قتل کی شدید مذمت کرتے ہیں،پاکستان جرمن پریس کلب کے صدر ،اوورسیز پاکستان فاونڈیشن یورپ چیر مین سلیم پرویز بٹ نے اپنے بیان میں کہا کہ ہم پاکستانی گورنمنٹ سے پر زور اپیل کرتے ہیں کہ جتنا جلد ہو سکے ملزم کو گرفتار کر کے کیفرکردار تک پہنچایا جائے ایسے بے شرم اور بے حیاء جانوروں کو ایسی عبرت ناک سزا ملنی چاہیئے تا کہ دوبارہ کوئی دوسرا ایسا جرم کرنے پے پہلے ہزار بار سوچینے پر مجبور ہو جائے،ان کا کہنا تھا کہ ایک بار پھر یہ بات کھل کر سامنے آ چکی ہے کہ ہمارے معاشرہ میں بچے کتنے غیر محفوظ ہیں ان کا کہنا تھا کہ یہ پہلا واقعہ نہیں آخر کب تک ہمارے بچوں کے ساتھ زیادتیوں اور قتل ہوتے رہیں گے ، انہوں نے بیان جاری رکھتے ہوئے کہا کہ عوام ضرور سڑکوں پر نکلیں لیکن مظاہرین کا کوئی حق نہیں کہ وہ اپنے ملک کی عمارات اور عوام کی گاڑیوں کو جلائیں ہمیں قانون کے دائرہ میں رہ کر کاروائی کرنی ہو گی ہمیں اشتعال بازی کی بجائے ملزم کے گرد گھیرا تنگ کر دینا چائیئے، یہ کیسے ممکن ہو سکتا ہے کہ ایک ہی ملزم 12دفعہ جرم کرے اور پکڑا نہ جائے ، اگر عوام چاہے تو ملزم کی چال ڈھال سے بھی ملزم تک پہنچ سکتی ہے اور یقیناََ ملزم اسی علاقہ کا رہائشی ہو گا جس کے ساتھ زینب ٹہلتی ہو ئی دکھائی گئی ہے پھر اسی کے محلہ میں لاش پھینکی جا رہی ہے اس کا کیا مطلب ہے۔ سید رضوان الحسن شاہ صاحب کا کہنا تھا کہ اس گھناوُنے فعل کا مرتکب درندہ سخت سزا کا مستحق ہے، ان کا کہنا تھا کہ مشعل افراد سے اپیل کی جاتی ہے کہ گھراوُ جلاوں سے گریز کریں اپنے چاروں طرف ملزم کو گرفتار کرنے کے لئے گھیرا تنگ کر دیں تا کہ ملزم بھاگ نہ سکے۔ سلیم پرویز بٹ صاحب نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کوخراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ آرمی چیف چیف نے دلیرانہ فیصلہ کیا ہے اب ہمیں امید ہے کہ جلد ہی ملزم کو انصاف کے کٹہرے میں کھڑا دیکھیں گے۔

ghu