۔،۔ قصور کے بچوں کاقاتل ابھی تک آزادکیوں ہے۔چودھری الطاف شاہد۔،۔
پاک سرزمین پارٹی برطانیہ ویورپ کے صدر چودھری محمدالطاف شاہد نے کہا ہے کہ قصور کے بچوں کاقاتل ابھی تک آزادکیوں ہے۔حکمرانوں کی طفل تسلی کافی نہیں ،عوام کونتیجہ آنے تک چین نہیں ملے گا۔جنسی درندوں کوقرارواقعی سزادی جائے ،اس قسم کے حیوانوں کاانسانوں کے درمیان رہنا خطرے سے خالی نہیں۔ نااہل حکمران وضاحت دیں ،قصور کے معصوم اوربے بس بچوں کا قصورکیا تھا۔پاک سرزمین پارٹی کے بانی ومرکزی چیئرمین مصطفی کمال ،مرکزی صدرانیس احمدقائم خانی اورسیکرٹری جنرل رضاہارون نے بچوں پر حالیہ جنسی تشدد کے واقعات پرگہری تشویش اوراپنے غم وغصہ کااظہارکیا ہے۔پاک سرزمین پارٹی کے بانی ومرکزی چیئرمین مصطفی کمال ،مرکزی صدرانیس احمدقائم خانی اورسیکرٹری جنرل رضاہارون شہرقائدؒ اوراسلام آبادسمیت چاروں صوبوں میں قانون کی حکمرانی کے خواہاں ہیں ۔سانحہ قصور سے بچوں کی نفسیات پرانتہائی منفی اثرپڑاہے ،ریاست ا س قسم کے واقعات کاسوفیصد سدباب یقینی بنائے ۔وہ پارٹی آفس میں مختلف وفود سے بات چیت کررہے تھے ۔ چودھری محمدالطاف شاہد نے مزید کہا کہ جہاں نااہل حکمران اپنے قلعہ نما محلات میں محصور ہوں گے وہاں بچوں کی حفاظت کون کرے گا۔اسلامی معاشرے میں بچوں پرجنسی تشدد کے اورانہیں جان سے مارنے کے واقعات قابل مذمت ہیں۔انہوں نے کہا کہ ان اندوہناک واقعات کے پیچھے حکمرانوں کی مجرمانہ غفلت اوربے حسی کارفرما ہے۔ قصور سمیت مختلف شہروں میں درندے دندناتے پھررہے ہیں،بچوں سمیت کسی عمر کے شہری شرپسندوں اورسماج دشمن عناصر سے محفوظ نہیں ۔انہوں نے کہا کہ پنجاب حکومت نے قصور کے ڈی پی اوکوہٹادیامگروہاں کے منتخب نمائندوں سے بازپرس تک نہ کی گئی جومقتول زینب کی نمازجنازہ میں بھی شریک نہیں ہوئے۔ڈی پی اوکی تبدیلی کافی نہیں ،امن وامان کی صورتحال میں نمایاں بہتری کیلئے حکمرانوں کواپنامائنڈسیٹ بدلناہوگا۔انہوں نے کہا کہ کیاامن وامان برقراررکھنے کے سلسلہ میں منتخب نمائندوں کاکوئی کردار نہیں ہے،وہ جوابدہ کیوں نہیں ہیں۔قصور میں بچوں کی آبروریزی کے واقعات منتخب نمائندوں کی اہلیت پرایک بڑاسوالیہ نشان ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہم وطنوں سمیت اوورسیزپاکستانیوں کو زینب کے قتل میں ملوث درندوں کے انجام بد کاانتظار ہے ۔