۔،۔جرمنی کے شہر فرینکفرٹ میں بسلسلہ یوم یکجہتی کشمیر احتجاج ریکارڈ کروایا گیا۔،۔

شان پاکستان جرمنی فرینکفرٹ۔ فرینکفرٹ مرکزی ٹرین سٹیشن کے سامنے بسلسلہ یوم یکجہتی کشمیر پرکشمیری اور پاکستانیوں کمیونٹی نے احتجاج ریکارڈکروایا ، پاکستان اور کشمیر سے محبت رکھنے والوں نے سردی کی پرواہ کئے بغیر احتجاج میں شرکت کی چند دوست و احباب اپنے چھوٹے بچوں کو بھی ساتھ لے کر آئے، یاد رکھیں تاریخ کا دھارا اپنا راستہ خود بناتا ہے اور وہ راستہ بننا شروع ہو چکا ہے، یقیناََکشمیر کی تحریک آزادی بہت سے مشکل اور تکلیف دہ مراحل سے گزرتی چلی آ رہی ہے ،جو حمایت کشمیریوں کو میسر آنی چائیئے تھی وہ ان کو نہ مل سکی کیونکہ امریکا اور اسرائیل بھارت کی طرف جھکے ہوئے ہیں ،لیکن ابھی ایک فضاء قائم ہو چکی ہے انٹرنیشنل لیول پر تبدیلی دیکھنے کو مل رہی ہے ، امریکا اور نیٹو کا انقلاب ۔ہمیں پانچ ہزار کی تاریخ بتاتی ہے کہ جب بھی افغانستان میں کوئی معرکہ اپنے نتیجے کو پاتا ہے اس کے بعد تمام برصغیر جنوبی ایشیاء اس سے متاثر ہوتا ہے ،بھارت ابھی تک غلط رُخ پر کھڑا ہے ،آہستہ آہستہ ان کے پاس کوئی چارہ نہیں رہے گا کہ وہ تحریک کشمیر پر غور کریں باوجود اس کے کہ بھارت کو اسرائیل،یورپ اور امریکا کی پشت پناہی حاصل ہے۔ آزادی کشمیر کی آواز نکالنے پر بچوں کا خون نچوڑ لیا جاتا ہے،عورتوں کی عصمت دری کی جاتی ہے ،گلے کاٹ دیئے جاتے ہیں اس کا دکھ ہر پاکستانی کو ہے۔ مبارکبادیں پیش کی جاتی ہیں، ان کی خدمت میں عرض ہے پاکستانی کمیونٹی اور پاکستانی کمیونٹی ہاتھوں میں ہاتھ ملائے ،قدم سے قدم ملائے ریلیاں اور احتجاج ریکارڈ کرواتے رہیں گے ،ہمیں نہیں بھولنا چاہیئے کہ ہر رات کے بعد سویرا آتا ہے، سورج طلوع ہوتا ہے، سورج ننھی ننھی کونپلوں کو روشنی مہیا کرتا ہے، شبنم کونپلوں کا چہرہ دھلواتی ہے،نسیم سحر کونپلوں کو جھولا جھلاتی ہے، زمین کونپلوں کو ہمت اور طاقت عطاء کرتی ہے پھر قدرت اسی ننھی سی کونپل کو تناور درخت بناتی ہے جو ہمیں گرمی کی شدت میں سایہ مہیا کرتا ہے،ہمیں میٹھے پھل مہیا کرتا ہے اور وہ پھل وادی کشمیر ہے ،یہ ہمارا قومی مسئلہ ہے ہم ان دوست و احباب کے شکر گزار ہیں جنہوں نے احتجاج میں حصّہ لیا ۔

1 2 3 IMG_5413 IMG_5441 IMG_5444 IMG_5424 IMG_5439 IMG_5423 IMG_5430 IMG_5445 IMG_5440