۔،۔ عمران خان کے گھر کی تعمیر غیر قانونی ہے۔چیف جسٹس۔،۔

چیف جسٹس آف پاکستان میں ثاقب نثار نے بنی گلاہ تعمیرات کے دوران سماعت کے دوران ریمارکس دے دیئے کہ عمران خان کے گھر کا نقشہ منظور شدہ نہیں اس لئے تعمیر غیر قانونی ہے۔

شان پاکستان اسلام آباد۔ سپریم کورٹ آف پاکستان میں اسلام آباد کے علاقہ بنی گالہ میں غیر قانوی تعمیراتی کیس کی سماعت ہوئی، عمران خان کی جانب سے ان کے وکیل بابر اعوان عدالت میں پیش ہوئے ، چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثار Mian Saqib Nisar نے بابر اعوان سے استفسار کیا کہ شور مچا ہوا ہے کہ عمران خان کے گھر کی دستاویزات درست نہیں اور تمام تعمیرات غیر قانونی ہیں، جس پر بابر اعوان نے موقف پیش کیا کہ( نقشہ کے لئے یونین کونسل کے پاس گئے تھے)این او سی NOCپر یونین کونسل کے سیکٹری کے دستخط ہیں، ہم نے جھوٹ نہیں بولا اور نہ ہی کوئش جعل سازی کی ہے ، جسٹس عمر عطاء بندیال نے ریمارکس دیئے کہ آپ بہت زیادہ سنجیدہ ہو گئے ہیں ،آپ یہ بیان دے سکتے ہیں کہ ہم قانون بننے کے بعد تعمیرات ریگولر کروا لیں گے، چیف جسٹس ثاقب نثار نے اپنے ریمارکس میں لکھا کہ بنی گالا میں سب کے لئے ایک ہی قانون بنے گا جو سلوک باقی لوگوں کے ساتھ ہو گا وہی آپ کے ساتھ بھی ہو گا ، آپ سے پہلے کہا گیا تھا کہ حفظ ماتقدم میں20لاکھ روپے جمعکروا دیں، عمران خان کے گھر کا نقشہ منظور شدہ نہیں ، عدالت کی نظر میں تعمیرات غیر قانونی ہیں ۔

hqdefault banigala Untitled-4 FI