۔،۔شام میں صف ماتم بچھی ہے مگر مقتدرقوتیں خاموش ہیں۔محمدناصراقبال خان۔،۔
ہیومن رائٹس موومنٹ انٹرنیشنل کے مرکزی صدرمحمدناصراقبال خان،چیف آرگنائزر میاں محمدسعید کھوکھر ،مرکزی آرگنائزرنازبٹ ، سیکرٹری جنرل محمدرضاایڈووکیٹ ،سینئر نائب صدورتنویرخان، محمداشرف عاصمی ایڈووکیٹ، ندیم اشرف ،سلمان پرویز،روحی کھوکھر ،مرکزی نائب صدور ناصرچوہان ایڈووکیٹ ، ممتازاعوان ،محمدشاہدمحمود ،صدر پنجاب محمدیونس ملک،صدربرطانیہ رانابشارت علی خاں ،صدرنیویارک محمد جمیل گوندل، صدر مدینہ منورہ سرفرازخان نیازی،صدرکراچی یونس میمن ،صدر چنیوٹ راناشہزادٹیپو ،صدرفیصل آبادندیم مصطفی اور صدر قصور میاں اویس علی نے کہا ہے کہ شام پرشیطانیت کاراج ہے،ظلم کی انتہاکردی۔شام پرشب خون مارنیوالے درحقیقت انسانی حقوق کی دھجیاں بکھیررہے ہیں،اس بربریت میں ملوث ملکوں پراقوام متحدہ کے ضابطہ اخلاق کااطلاق کیوں نہیں ہوتا ۔شیرخواربچے دودھ کی بجائے جام شہادت نوش کررہے ہیں۔بڑی تعداد میں شہادتوں کے سبب شہیدوں کواجتماعی قبورمیں سپردخاک کیاجارہا ہے۔شام میں گھرگھر صف ماتم بچھی ہے مگر مقتدرقوتیں خاموش ہیں۔ اہل شام پائیدارامن اورسحر کے منتظر ہیں۔جانوروں کے حقوق کیلئے آسمان سرپراٹھانے والے نام نہاد مغرب نے بھی شام کے شعلے بجھانے کی کوشش نہیں کی۔شام کے بیگناہ مسلمانوں کوکس گناہ کی پاداش میں شہیدکیا جارہا ہے۔وہ ایک اجلاس سے خطاب کررہے تھے ۔محمدناصراقبال خان، میاں محمدسعید کھوکھر اورنازبٹ نے مزید کہا کہ انسانیت کے بغیر انسانوں کاکوئی مستقبل نہیں ،انسان وہ ہے جودوسرے انسان کادردمحسوس اوراس کیلئے آسانیاں پیداکرے ۔شام کے مقامی لوگ ایک طرف بارود سے چھلنی ہوکر اوردوسری طرف بھوک سے ایڑیاں رگڑرگڑکرمررہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ شام میں رفاعی اداروں کوفلاحی وامدادی سرگرمیوں کی بھی اجازت نہیں ہے۔ شام کے شہروں پرفضائی حملوں کے نتیجہ میں ہزاروں کی تعدادمیں ہسپتال ،گھراورتعلیمی ادارے زمین بوس ہوگئے جبکہ سینکڑوں مساجدشہید کردی گئیں مگر اقوام متحدہ نے ابھی تک ایکشن نہیں لیا ۔آگ کااصول ہے اگریہ بروقت نہ بجھائی جائے توپھیلتی چلی جاتی ہے ،شام کے شعلے دوسرے ملکوں کوبھی لپیٹ میں لے سکتے ہیں لہٰذاء پاکستان سمیت دنیا کی مقتدر قوتوں کوفوری طورپرشام میں پائیدارامن کی بحالی کیلئے اپنااپناکرداراداکرناہوگا۔انہوں نے کہا کہ شام بحران مزید چشم پوشی کامتحمل نہیں ہوسکتا،خداراوسائل کااستعمال کشت وخون کی بجائے دنیا کوامن وآشتی کاگہوارہ بنانے کیلئے کیاجائے ۔