-،-عدلیہ سازش نہیں‘ آئین ‘ عوام اور پاکستان کا تحفظ کررہی ہے‘ جی کیو ایم-،-
نا اہلی کو انتقام قرار دیکر عدلیہ عوام محاذآرائی کا مقصد پاکستان میں شام جیسے حالات پیدا کرنا ہے!
قومی انتخابات 2018ء میں آئین کی شق 62و63پر اس کی روح کے مطابق عمل کرا یا جائے!

کراچی ( اسٹاف رپورٹر ) سپریم کورٹ کی جانب سے آئین کے آرٹیکل ون ایف کی تشریح کرتے ہوئے صادق و امین ثابت نہ ہونے والے ممبران اسمبلی کو تاحیات نااہل قرار دیئے جانے کے عدالتی فیصلے پر تبصرہ کرتے ہوئے گجراتی قومی موومنٹ کے چیئرمین عرفان سولنگی عرف پٹی والا ‘ سینئر وائس چیئرمین طارق صدیقی ‘ رہنما وومین ونگ ارم رحیم عبداللہ و دیگر نے کہا ہے کہ پاکستانی عدلیہ مکمل طور پر غیر جانبداری وجرأتمندی کیساتھ اپنا آئینی و قومی فریضہ ادا کرتے ہوئے عوامی مفادات کا تحفظ اور انصاف کررہی ہے مگرانصاف و احتساب کی زد میں آنے والے عناصر عدلیہ پر جانبداری و انتقام کا الزام لگاکر اپنی عوامی ساکھ برقرار رکھنا اور عوام کو عدلیہ کیخلاف اکساکر ملک میں شام جیسے حالات پیدا کرنا چاہتے ہیں ۔ عرفان سولنگی نے مزید کہا کہ آئین کے آرٹیکل ون ایف کی زد میں آنے کا مطلب ملک و قوم اور عوام سے دھوکادہی ہے اور اس جرم میں نااہلی صرف اقتدار کو صداقت و امانت کے معیار پر پورا نہ اترنے والوں سے پاک کرنا ہے مگر یہ ان کے جرم کی سزا نہیں ہے اسلئے سپریم کورٹ کو اس آرٹیکل کے تحت اب تک نا اہل ہونے والے تمام اراکین اسمبلی کا احتساب کرتے ہوئے انہیں ان کے جرم کی قرار واقعی سزا بھی دینا چاہئے اور آئندہ کیلئے اختیار و اقتدار کوبد دیانت اورکرپٹ عناصر سے محفوظ رکھنے کیلئے آئندہ انتخابات آئین کی شق 62و 63پر اس کی روح کے مطابق مکمل عملدرآمد کراتے ہوئے کرانے چاہئیں ۔