-،-نوازشریف کے بیان کی شدید مذمت کرتا ہوں* رحمت خان وردگ-،-
نوازشریف اپنے اقتدار کی خاطر 22 کروڑ عوام اور ملک کو مشکلات میں نہ ڈالیں*
بقول قاضی حسین احمدمرحوم‘ نوازشریف واحدسیاستدان ہیں جواسامہ بن لادن سے ون ٹو ون ملاقات کرچکے ہیں*
پاکستان کی پارلیمنٹ میں ایسے غداروطن موجود ہیں جو بھارت اور افغانستان کے خلاف بات برداشت نہیں کرسکتے‘
ایسے غداروطن کے پارلیمنٹ میں جانے پر پابندی ہونی چاہئے* رحمت خان وردگ‘ مرکزی صدر‘ تحریک استقلال
،- 14مئی 2018ء کراچی ( ) تحریک استقلال کے مرکزی صدر رحمت خان وردگ نے نوازشریف کے بمبئی حملوں کے متعلق بیان کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ نوازشریف کو قوم نے بہت عزت دی اور 3 بار وزیراعظم بنایا لیکن اب وہ اپنے اقتدار کی خاطر 22 کروڑ عوام اور پاکستان کے لئے مشکلات پیدا کررہے ہیں اور ان کا رویہ ایسا ہے کہ اگر میں خوداقتدار میں نہیں آسکتا تو ایسے میں جمہوریت تو کجا ملک کا وجود ہی برداشت نہیں۔ نوازشریف کے بیان کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے کیونکہ اس بیان سے پاکستان کو دنیا بھرمیں تنہا کرنے کی سازش کی گئی ہے۔انہوں نے کہا کہ قاضی حسین احمد مرحوم نے کہا تھا کہ نوازشریف واحد سیاستدان ہیں جنہوں نے اسامہ بن لادن سے ون ٹو ون ملاقات کی تھی۔ میاں نوازشریف 3 بار وزیراعظم رہے ہیں تو اپنے اقتدار کے دوران آخر وہ کیا کچھ کرتے رہے ہیں‘ اس بارے میں اقتدار کے دوران کیوں خاموش رہے؟ کیونکہ اب ایسے وقت میں متنازع ترین بیانات دینا کہ جب انہیں تاحیات نااہل کیا جاچکا ہے او رنیب ٹرائل جاری ہے تو اس حربے کو عوام اچھی طرح سمجھ چکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ نوازشریف کے منہ سے آج تک کلبھوشن کے خلاف ایک لفظ بھی نہیں نکلا اور قوم اس متعلق ان کے بیان کی عرصہ دراز سے منتظر ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ بدقسمتی سے پاکستان کی پارلیمنٹ میں ایسے افراد موجود ہیں جو بھارت اور افغانستان کے خلاف بات ہی نہیں کرنے دیتے اور ان کے رویوں سے ایسا لگتا ہے جیسے یہ بھارتی یا افغان پارلیمنٹ سے خطاب کر رہے ہوں‘ ایسے لوگ غدار وطن ہیں اور ایسے لوگوں کے پارلیمنٹ میں جانے پر مکمل پابندی لگنی چاہئے۔