۔،۔ راہاف محمد جو اپنا مذہب چھوڑ چکی ہے ،سعودی عرب سے فرار۔،۔

شان پاکستان سعودی عرب ۔بنکاک۔ غیر ملکی خبر رساں ادارے بی بی سی BBC کے رپورٹر جانتھن ہیڈ Jonathan Head کے مطابق راہاف محمد Rahaf Mohameedبہت خوی زدہ ہیں ان کو ڈر ہے کہ ان کو قتل کروا دیا جائے گا ، راہاف محمد کا کہنا تھا کہ میرے پاس آسٹریلیا کا ویزہ ہے لیکن ان کا بنکاک میں سورنا بھومی ایئر پورٹ Bangkok Suvarnabhumi Airport پر سعودی سفارتی اہلکار نے پاسپورٹ ضبط کر لیا جو انہیں جہاز سے اترتے ہی ملے تھے۔ تھائیThai کے ایک پولیس اہلکار کے مطابق رہاف محمد القنون Rahaf Mohameed Alqanoonشادی نے انکار پر بھاگ رہی تھی اور ویزہ نہ ہونے کی وجہ سے تھائی لینڈ Thailandکی پولیس نے انہیں انٹری کی اجازت نہیں دی اور قانونی طریقہ کو مد نظر رکھتے ہوئے کویت ایئر لائن سے سعودیہ واپس بھیجنا چاہتے تھے، پولیس اہلکار نے پاسپورٹ کے ضبط کئے جانے کے بارے میں کوئی بیان نہیں دیا۔ رہاف نے ایک ٹویٹ میں لکھا ہے کہ انہیں ڈر ہے کہ ان کے خاندان والے اسے مار دیں گے، انہوں نے بی بی سی کے نمائندہ سے بات کرتے ہوئے اس بات کا اقرار کیا ہے کہ وہ اسلام چھوڑ چکی ہیں۔واضح رہے کہ  اس سے پہلے 2017 میں بھی ایک ایسا ہی کیس سامنے آیا تھا جب ایک سعودی خاتون نے فلپائن کے راستے آسٹریلیا جانے کی کوشش کی تھی۔چوبیس سالہ دینا علی بھی کویت سے روانہ ہوئی تھیں لیکن ان کے خاندان والے انہیں منیلا ایئرپورٹ سے واپس سعودی عرب لے گئے تھے۔ دینا نے ایک آسٹریلوی سیاح کے فون کے ذریعے ٹوئٹر پر ایک پیغام اور وڈیو جاری کی تھی کہ ان کے گھر والے انہیں قتل کر دیں گے۔دینا علی کے ساتھ سعودی عرب پہنچ کر کیا ہوا یہ پھر معلوم نہیں سکا تھا۔