۔،۔ پاکستان میں امن کے لئے جرمنی میں بسنے والے پاکستانیوں کی متحدہ ریلی نکالی جائے گی۔نذر حسین۔،۔

۔،۔ شان پاکستان جرمنی فرینکفرٹ۔26نومبر 2011کو نیٹو افواج نے پاکستانی چیک پوسٹ پر حملہ کر کے 24فوجیوں کو شہید کر دیا تھا ،جرمنی میں بسنے والے پاکستانیوں کے دل پاکستان اور افواج پاکستان کے ساتھ دھڑکتے ہیں واقعہ کے فوراََ بعد جرمنی میں ایک یاد گار ریلی کا اہتمام کیا گیا،16دسمبر 2014آرمی پبلک سکول پشاور پر حملہ میں 148 افراد کو شہید کیا گیا جس میں سے 130 معصوم بچے شامل تھے جرمنی میں بسنے والے تمام پاکستانیوں نے ثابت کیا کہ ہم پاکستان اور پاکستانی افواج کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں ایک بار پھر سڑکوں پر مظاہرے کئے گئے۔اب ایک بار پھر بھارتی دشمنوں نے پاکستان کے حدود کی خلاف ورزی کرتے ہوئے پاکستان پر حملہ کیا ،دشمن نے پاکستان پر میزائل حملہ کا منصوبہ بنایا جس کا پاکستانی انٹیلی جنس کو برقت علم ہو چکا تھا جس وجہ سے دشمن کو منہ کی کھانی پڑی، پاکستانی قوم کو اپنی افواج پر فخر ہے ،پاکستانی مسلم کمیونٹی ایک بار پھر اس عزم کے ساتھ ایک پلیٹ فارم پر اکٹھی ہو گئی کہ ہمارا مرنا جینا پاکستان کے ساتھ ہے مسلم کمیونٹی افواج پاکستان کے شانہ بشانہ کھڑی ہے ، توقیر بُٹر صابری ،نذر حسین کی ایک کال پراپنے تمام اختلافات بھول کر سیاسی،مذہبی اور کاروباری شخصیات کی میٹنگ بلائی گئی ، پاکستان کے نام پر تمام دوست اپنے اختلافات کو بھول کر اکٹھے ہوئے جس میں یہ فیصلہ کیا گیا کہ آج کے بعد ہمیشہ تمام مسلم کمیونٹی *قادیانیوں* کے علاوہ جب بھی ضرورت پڑے گی کمیونٹی کے خاص نمائندے باقاعدہ مل کر اعلان کیا کریں گے تا کہ مکمل اور با اثر طریقہ سے احتجاج ریکارڈ کروایا جا سکے، احتجاج میں جرمن میڈیا کو مدعو کیا جائے گا، باہر سے آنے والی قیادت کو قبول نہیں کیا جائے گا۔ تمام مسلم کمیونٹی عقیدہ ختم نبوت و تحفظ ختم نبوت پر تائید و حمائیت کے لئے کھڑی ہو گی اور سازشی ذہنیت رکھنے والوں کے سامنے سیسہ پلائی دیوار بن جائے گی۔ پاکستانی کمیونٹی کے علاوہ ترکی مسلم کمیونٹی،افغان کمیونٹی اور بنگلہ دیشی مسلمانوں کو بھی ریلی میں شامل ہونے کی دعوت دی جائے گی، کمیونٹی میٹنگ میں۔طفیل بُٹ۔،حافظ عبد الرحمن،رانا لیاقت علی، سید حامد شاہ، سید فرحت حسین، چوہدری اظہر فاروق، محمد اقبال خان، نذر حسین، سلیم پرویز بُٹ، توقیر بُٹر صابری، یونس اکرم، محمد فاروق بُٹ، چوہدری وقار، حاجی عدنان، راشد شاہ، فاروق چوہدری، اور ملک قیصر نے شرکت کی ، سید حامد شاہ،رانا لیاقت اور حافظ عبدالرحمن کا کہنا تھا کہ ہم امید کرتے ہیں کہ ماضی سے سبق سیکھتے ہوئے ملک پاکستان کے لئے اپنا فرض نبھاتے ہوئے ایک دوسرے کے بازو اور سیسہ پلائی دیوار بن کر قدم بڑھائیں گے۔ محفل کے اختتام پر سید فرحت حسین شاہ صاحب نے یکجہتی ، امن اور اتحاد کے لئے دُعا فرمائی ۔دُعا کے بعد رانا لیاقت علی کی طرف سے دوستوں کو عشائیہ پیش کیا گیا۔