۔،۔دہشت گرد کون ہے،آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ کے مدرسوں کو بھی بند کیا جائے۔،۔

شان پاکستان نیوزی لینڈ۔ آسٹریلیا کا شہری برینٹن ٹیرنٹ Branton Tarrant انتہا پسند جس کی عمر 28 سال بتائی جاتی ہے اور آسٹریلیا کا شہری ہے ، یہ بھی تو آسٹریلین یا نیوزی لینڈ کے مدرسوں میں پڑھا ہو گا ان مدرسوں کو کیوں نہیں بند کیا جا رہا جہاں پر ایسے دہشت گردوں کو پڑھایا اور ٹریننگ دی جاتی ہے۔ Branton Tarran نے دہشت گرد اینڈرز بریوکAnders Breivik کے نقش قدم پر چلتے ہوئے اور اس سے متاثر ہو کر دہشت گردی کی ہولناک واردات سر انجام دے ڈالی۔بریوک Anders Breivikنے 2011 میں ناروے میں فائرنگ کر کے 85افراد کو موت کے گھاٹ اتار دیا تھا۔ نیوزی لینڈ میں مساجد پر حملہ آور کے اسلحہ پر مسلم عیسائی جنگوں کی تواریخ لکھی ہوی تھیں۔ترکی کے صدر اردہ خان کا کہنا ہے کہ مسلمانوں کے خلاف نفرت پھیلانے والے سیاستدان اور میڈیا بھی اس واقع کی ذمہ دار ہے۔نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ میں جمعے کے روز مساجد پر حملہ کرنے والے دہشت گرد برینٹن ٹیرینٹ کو عدالت میں پیش کردیا گیا۔ دوران سماعت دہشت گرد برینٹن ٹیرینٹ بے حسی کا مظاہرہ کرتا رہا اور اس کے چہرے پر ندامت کے بجائے خباثت سے بھرپور مسکراہٹ تھی، جس سے یہ ظاہر ہورہا تھا کہ اسے اپنے کئے پر کوئی شرمندگی نہیں۔ اس کے علاوہ اس نے ضمانت کی درخواست بھی نہیں کی۔کرائسٹ چرچ پولیس کا کہنا ہے کہ عدالت میں برینٹن ٹیرینٹ پر ابتدائی طور پر قتل کے الزامات عائد کیے گئے ہیں، مزید تحقیقات کے بعد دہشتگرد پر مزید الزامات میں فرد جرم عائد کی جائے گی۔ برینٹن ٹیرینٹ کو 5 اپریل کو عدالت میں دوبارہ پیش کیا جائے گا ، اس وقت تک وہ پولیس کی تحویل میں رہے گا۔مقامی میڈیا کے مطابق پولیس نے برینٹن ٹیرینٹ کے دیگر ساتھیوں کو بھی حراست میں لیا ہے ، جنہیں بھی عدالت میں پیش کیا جائے گا۔دوسری جانب نیوزی لینڈ کی وزیر اعظم جیسنڈراآرڈرن نے میڈیا بریفنگ میں بتایا کہ حملے کے فوری بعد پولیس نے کارروائی کی جب کہ حملہ آور پولیس کی تحویل میں ہے، حملہ آور نہ آسٹریلیااور نہ ہی نیوزی لینڈ کی واچ لسٹ میں تھا، ہماری پہلی ترجیح جاں بحق ہونے والے افراد کی شناخت تھی، متاثرہ کمیونٹی کی ہر ممکن مدد کی جا رہی ہے، متاثرین کی مالی مدد کی جائے گی اور بہت بڑا مالی پیکیج دیا جائے گا، پولیس کو کچھ چیلنجز درپیش ہیں، جس کے لئے قانون سازی کی جائے گی۔

ایڈیٹرچیف نذر حسین کی زیر نگرانی آپ کی خدمت میں پیش ہے