۔،۔سری لنکا کے بعض اضلاح میں مسلم کش فسادات پھوٹ پڑے۔،۔

شان پاکستان سری لنکا کوامبو۔ بین الاقوامی خبر رساں اداروں کے مطابق سری لنکا کے بعض اضلاح میں مسل کش فسادات پھوٹ پڑے،فسادات کی آڑ میں مسلمانوں کی مساجد اور املاک کو نذر آتش کر دیا گیا کئی علاقوں میں اپنی جان بچانے کی خاطر مسلمانوں نے تھانوں میں پناہ لے رکھی ہے۔ افواہوں کی روک تھام کے لئے سوشل میڈیا پر فوری طور سے پابندی عائد کر دی گئی ہے اس کے ساتھ ساتھ مقامی انتظامیہ نے فسادات پر قابو پانے کی خاطر متاثرہ اضلاح میں کرفیو بھی نافذکر دیا ہے۔پولیس کے مطابق اس فساد نے اس وقت تباہی مچانی شروع کی جب کہ ایک مسلمان دکاندار نے اپنی فیس بک پر لکھا کہ ہنسو مت۔ ایک روز تم سب لوگ رووُ گے، مقامی مسیحی باشندوں نے ان الفاظ کو دھمکی سمجھ کر مسلمان دکاندار کی پٹائی کر دی۔قبل ازیں مشتعل کیتھولک عیسائی گروہ نے مسلمان رکشہ والے سے معمولی تلخ کلامی کے بعد رکشے کو آگ لگادی تھی اور مسلمانوں کی املاک کو نذر آتش کردیا تھا۔ ایسٹر دھماکوں کے بعد مسلمان آبادیوں پر حملوں کا سلسلہ تاحال جاری ہے۔واضح رہے کہ ایسٹر کے موقع پر سری لنکا کے 3 چرچوں اور 3 ہوٹلوں پر خود کش دھماکے میں 250 سے زائد افراد ہلاک اور 500 سے زائد زخمی ہوگئے تھے۔ دھماکے کی ذمہ داری داعش نے قبول کی تھی اور خود کش بمبار مقامی شہری تھے۔

ایڈیٹرچیف نذر حسین کی زیر نگرانی آپ کی خدمت میں پیش ہے