۔،۔عمران خان کونیب کاترجمان کس نے نامزدکیاہے:شاہداقبال۔،۔
تحریک انصاف کے دورمیں انصاف کادوردورتک کوئی نام ونشان نہیں

پاکستان مسلم لیگ(ن) سعودیہ کے ممتاز رہنماء اورمسلم سٹوڈنٹس فیڈریشن کے سابق رہنما ء محمد شاہداقبال نے کہا کہ عمران خان کونیب کاترجمان کس نے نامزدکیا ہے۔وہ کس بنیادپر اپوزیشن قائدین کی گرفتاریوں کاشوشہ چھوڑتے ہیں۔اِدھروزیراعظم اوروزراء کے بیانات آتے ہیں اُدھر اپوزیشن قائدین کوگرفتارکرلیاجاتا ہے۔ایوان وزیراعظم میں براجمان ایک اناڑی ریموٹ کنٹرول کی مدد سے نیب کواپنے سیاسی مفادات کیلئے استعمال کررہا ہے۔وفاق،پنجاب اورکے پی کے میں پی ٹی آ ئی کااقتدار نیب زدگان کے سہارے برقرار ہے۔ اپوزیشن کی بڑی شخصیات کی گرفتاری بارے،عمران خان کویہ کس نے اورکیوں بتایا۔عمران خان کے حالیہ بیان کے بعد کوئی نیب کی خودمختاری اورغیرجانبداری تسلیم کرے گا۔ تحریک انصاف کے دورمیں انصاف کادوردورتک کوئی نام ونشان نہیں۔عمران خان کس حیثیت میں نیب کوڈکٹیشن دے رہے ہیں،رات بارہ بجے موصوف کے حالیہ نام نہادپیغام نے نیب کی ساکھ کوراکھ کاڈھیر بنادیا۔چیئرمین نیب اورڈی جی نیب لاہور فوری اپنے اپنے منصب سے مستعفی ہوں۔ وہ اپنے اعزازمیں ایک استقبالیہ سے خطاب کررہے تھے۔محمدشاہداقبال نے مزید کہاکہ بیوروکریٹس ارباب اقتدار کے متنازعہ اورماورائے آئین احکامات پرآنکھیں بندکرکے دستخط نہیں کرسکتے۔پی ٹی آئی کی اناڑی قیادت گورننس کے مفہوم تک سے آشنا نہیں۔انہوں نے کہا کہ عوام کی چیخوں اورآہوں کے باوجودعمران خان کی آنکھیں کھلیں نہ کھلیں گی۔دوسروں کوبچے بیرون ملک بیٹھنے کاطعنہ دینے والے عمران خان کے اپنے دونوں بیٹے لندن میں مقیم ہیں۔انہوں نے کہا کہ عمران خان کے طرزسیاست اورشخصیت میں بدترین تضادات ہیں۔عمران خان کے بیانات اورارشادات اووروں کونصیحت خودمیاں فضیحت کے مصداق ہیں۔انہوں نے کہا کہ مرکزمیں میاں نوازشریف اورپنجاب میں میاں شہبازشریف کادورحکومت آج سے ہزارگنا بہترتھا۔عوام اپنے محبوب قائدمیاں نوازشریف کواپنے درمیان دیکھنے کے خواہاں ہیں، میاں نوازشریف کوسنائی جانیوالی متنازعہ سزاختم کرتے ہوئے انہیں فوری اور باعزت طورپر آزاد کیاجائے۔

ایڈیٹرچیف نذر حسین کی زیر نگرانی آپ کی خدمت میں پیش ہے