،۔قلم کاروان،اسلام آباد۔ڈاکٹرساجدخاکوانی ۔،۔

منگل مورخہ 11جون2019 بعد نماز مغرب قلم کاروان کی ادبی نشست مکان نمبر1اسٹریٹ 38،G6/2اسلام آبادمیں منعقد ہوئی۔ یہ نشست رمضان المبارک کے تعطل کے بعد وقوع پزیرہوئی۔پیش نامے کے مطابق آج کی ادبی نشست میں ”اقوام ثلثہ،قرآن مجید کی روشنی میں“کے عنوان سے بزرگ ماہرلسانیات جناب پروفیسر ڈاکٹرعطااللہ خان یوسف زئی کامضمون شامل تھا۔ معروف مذہبی اسکالرجناب ساجد حسین ملک نے صدارت کی۔نشست کے آغازمیں تلاوت قرآن مجیدہوئی،شیخ عبدالرازق عاقل نے مطالعہ حدیث نبویﷺاورپروفیسرڈاکٹرساجدخاکوانی نے گزشتہ نشست کی کاروائی پیش کی۔صدرمجلس کی اجازت سے جناب پروفیسرڈاکٹرعطااللہ خان یوسف زئی نے اپنا مقالہ پیش کیا،مقالے میں قرآن مجید کی سب سے طویل ترین سورۃ،سورہ بقرہ کے ابتدائی حصے میں مذکورہ تین گروہوں کی خصوصیات پر حاصل مطالعہ پیش کیاگیاتھا،مقالہ نگار نے بڑی خوبصورتی کے ساتھ تین انسانی گروہوں متقین،کفاراورمنافقین کی نشانیوں کو حالات حاضرہ پر منطبق کیاتھا۔مقالے میں قرآنی تعلیمات کو اس طرح پیش کیاگیاجیسے یہ مقدس کتاب آج نازل ہورہی ہے۔بزرگ مقالہ نگارنے ان آیات کے تناظر میں عالمی حالات کابھی احاطہ کیا اور بڑی جرات سے بتایا کہ فی زمانہ انسانوں کی قیادت عام طورپر اور امت مسلمہ کی قیادت خاص طور پر ان گروہوں میں سے کس کس گروہ کاکردار اداکررہے ہیں۔مقالہ پیش ہونے کے بعد شرکاء نے سوالات بھی کیے جن کے فاضل مصنف نے تفصیلی جوابات دیے اور متعدد غلط فہمیوں کا ازالہ بھی کیا۔مقالے پرتبصرہ کرتے ہوئے شہزادعالم صدیقی نے کہاکہ متاخرین اور متقدمین کی تفاسیر میں بہت فرق ہے کیونکہ قرآن مجید ایک زندہ کتاب ہے۔ڈاکٹرساجد خاکوانی نے کہاکہ عرب وایران میں بہت سی ایسی تفاسیر لکھی گئی ہیں جو سائنسی اسلوب سے تعلق رکھتی ہیں اوران تفاسیر میں مفسرین کرام نے قرآنی آیات کی ایسی تشریحات پیش کی ہیں جن سے متعددعصری سائنسی تحقیقاتی نتائج کے برحق ہونے کا ثبوت ملتاہے۔مقالہ کے بعد پہلے شہزادعالم صدیقی نے مثنوی مولائے روم کے فارسی اشعار کی اردو تفہیم پیش کی اور اقبالیات سے بھی مدد لی،انہوں نے بتایا کہ مولائے روم کے مطابق اللہ تعالی کاقلب انسانی میں ورود تب ہی ممکن ہے جب دل کاآئینہ بالکل صاف شفاف ہوجائے۔بعدازاں شیخ عبدالرازق عاقل نے حسب معمول اپنی تازہ غزل نذرسامعین کی اورداد وصول کی۔ صدر مجلس جناب ساجد حسین ملک نے مقالے کی تعریف کی،اسلوب بیان اورطرزاستدلال کوپسندکیااور مقالہ نگار کی تجزیہ نگاری کو سراہا۔انہوں نے بتایا کہ وہ قرآن مجید سے عشق کی حد تک پیارکرتے ہیں اور حتی الامکان قرآن مجید سے جڑے رہنے کواپنی سعادت اور خوش بختی سمجھتے ہیں۔انہوں نے متقین،کفاراور منافقین کے بارے میں کہاکہ کفاراور منافقین اپنے انجام کے اعتبارسے ایک ہی گروہ ہیں اور ان کا ٹھکانہ آتش دوزخ ہے۔انہوں نے کہاقرآن مجید دراصل اتحادامت کاضامن ہے اور یہ ایسی کتاب ہے جو مشرق و مغرب کے مسلمانوں کے درمیان قدرمشترک ہے۔انہوں نے اپنے صدارتی خطبے میں کہاامت مسلمہ کو عظمت رفتہ تب ہی مل سکتی ہے کہ امت مسلمہ قرآن مجیدکی تعلیمات کی طرف واپس پلٹ آئے اور مغرب سے مستعار استحصالی نظام واپس کرکے توصرف قرآنی نظام حیات کواپنائے۔صدارتی خطبے کے ساتھ ہی آج کی ادبی نشست اختتام پزیر ہوگئی،

ایڈیٹرچیف نذر حسین کی زیر نگرانی آپ کی خدمت میں پیش ہے