۔،۔راناثناء اللہ خاں ضمیر کے قیدی جبکہ حکمران اناکے اسیر ہیں: نویدشاہ۔،۔


ہمارے دبنگ لیڈر کی گرفتاری ناگزیرتھی مگرحکومت نے انتہائی بھونڈا راستہ چنا

مسلم سٹوڈنٹس فیڈریشن لاہورڈویژن کے سابق صدراورپاکستان مسلم لیگ (ن) امریکا کے ممتازرہنمانویدشاہ نے کہا ہے کہ راناثناء اللہ خاں ضمیر کے قیدی جبکہ حکمران اناکے اسیر ہیں۔مریم نواز،میاں حمزہ شہباز،راناثناء اللہ خاں اورمیاں جاویدلطیف سے حکمرانوں کا ڈرنافطری ہے۔منڈی بہاؤالدین میں دختر پاکستان مریم نواز کے تاریخی اجتماع سے قومی سیاست کارخ تبدیل ہوگیا۔راناثناء اللہ خاں کی تنقیدحکمرانوں کیلئے ناقابل برداشت ہوگئی تھی۔انہوں نے پنجاب کی سطح پرمسلم لیگ(ن) کی ضلعی تنظیموں کومتحرک کرنے کافیصلہ کرلیا تھاجس سے حکمرانوں کاپیمانہ صبر چھلک پڑا۔ اپوزیشن کے مستعد لیڈر،مسلم لیگ (ن) پنجاب کے صوبائی صدراورسابق صوبائی وزیرقانون راناثناء اللہ خاں کوٹارگٹ کیا گیا،ہمارے دبنگ لیڈر کی گرفتاری ناگزیرتھی مگرحکومت نے انتہائی بھونڈا راستہ چنا۔منشیات والے معاملے میں کوئی صداقت نہیں۔راناثناء اللہ خاں کی سچائی حکمرانوں کیلئے رسوائی کاسبب بن جاتی ہے۔اپنے ایک بیان میں نویدشاہ نے مزید کہا کہ راناثناء اللہ خاں مردمیدان ہیں،منتقم مزاج حکمرانوں کے زندان بھی پرعزم راناثناء اللہ خاں کوکچھ نہیں بگاڑسکتے۔راناثناء اللہ خاں کی عنقریب آبرومندانہ رہائی سے حکمرانوں کی رسوائی ہوگی۔انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی والے یادرکھیں ان کی انتقامی سیاست کی عمرزیادہ طویل نہیں ہوسکتی۔ راناثناء اللہ خاں کوجس نے گرفتارکیا وہ بھی شرمسار ہے مگروہ حکمرانوں کی اطاعت پرمجبور ہیں۔انہوں نے کہا کہ راناثناء اللہ خاں کے ساتھ جیل میں نارواسلوک ناقابل برداشت ہے۔حکمران یادرکھیں آج وہ ہماری قیادت کی راہوں میں جو کانٹے بچھارہے ہیں کل انہیں وہ اپنی آنکھوں سے چننا پڑیں گے۔

ایڈیٹرچیف نذر حسین کی زیر نگرانی آپ کی خدمت میں پیش ہے