۔،۔ سپریم کورٹ کا کہنا ہے کہ ٭نیپ کا اللہ ہی حافظ ہے٭۔،۔

شان پاکستان اسلام آباد۔ چیف جسٹس کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے ایل این جی LNGکوٹہ کیس میں سلبق وزیر انور سیف اللہ اور سابق سینیٹر صفدر عباسی کی بریت کے خلاف نیپ اپیلوں کی سماعت کی۔ سپریم کورٹ نے انور سیف اللہ اور صفدر عباسی کی بریت کا فیصلہ برقرار رکھتے ہوئے نیپ اپیلیں خارج کر دی ہیں۔نیب وکیل نے دلائل میں کہا کہ انور سیف اللہ نے بطور وزیر پٹرولیم گیس کوٹہ جاری کیا حالانکہ انہیں کوٹہ دینے کا اختیار نہ تھا۔ جسٹس عظمت سعید نے پوچھا کہ قواعد و ضوابط کے تحت کوٹہ دینے کی مجاز اتھارٹی (ادارہ) کون سی تھی؟۔نیب وکیل نے کہا کہ مجاز اتھارٹی بارے کوئی ریکارڈ نہیں۔ اس پر جسٹس عظمت سعید نے کہا کہ نیب کا اللہ ہی حافظ ہے۔ چیف جسٹس نے بھی کہا کہ ہمارا اور سب کا اللہ حافظ ہے۔جسٹس عظمت نے کہا نیب کا موقف ہے وزیر نے اپنی صوابدید پر کوٹہ دیا، نیب نے ثابت کرنا ہے کوٹہ دینے کا اختیار کس کا تھا، ریکارڈ میں کسی جگہ وزیر کا کوٹہ دینے کا حکم یا دستخط نہیں، کیا کیس کو پراسیکیوٹ (چلانے) کرنے کا یہ طریقہ ہے، اس بات کے ثبوت کدھر ہیں کہ انور سیف اللہ نے کوٹہ دیا۔

سپریم کورٹ نے سماعت کے بعد نیب اپیل مسترد کردی۔

ایڈیٹرچیف نذر حسین کی زیر نگرانی آپ کی خدمت میں پیش ہے