۔،۔ کشمیری کمیونٹی،سکھ کمیونٹی، پاکستان کمیونٹی اور پاکستان جرمن پریس کلب کی درد مندانہ اپیل۔نذر حسین۔،۔

شان پاکستان جرمنی فرینکفرٹ۔ ہم تمام سیاسی۔ کاروباری۔ مذہبی اور سماجی کمیونٹی سے پر زور اپیل کرتے ہیں کہ اس نازک موقع پر کشمیریوں کا ساتھ دیں اور خصوصاََ مذہبی تنظیموں اور مساجد سے خصوصی اپیل ہے کہ 11اگست 2019بروز عید الاضحی نماز عید کہ موقع پر خصوصاََ اعلان فرمائیں کے 15 اگست 2019 بروز جمعرات مودی حکومت کی حالیہ ہونے والی صدارتی غنڈہ گردی کے خلاف نکلنے والی ریلی میں شرکت کر کے اس کو کامیاب بنائیں اقوام متحدہ تک پہنچنے والی گونج میں اپنی آواز کو شامل کریں۔کشمیریوں اور سکھوں کی نسل کُشی پر احتجاج میں حصّہ لیں۔پوری دنیا میں صرف ایک آواز گونج رہی ہے۔مودی بھارت کی بربادی کا دوسرا نام ہے۔ پوری دنیا بھارتی صدارتی غنڈہ گردی کے خلاف سراپا احتجاج ہے۔ ہم کشمیر کو فلسطین نہیں بننے دیں گے۔پاکستان۔چین۔ ترکی اور ملائیشیا سمیت جموں و کشمیر ہائیکورٹ نے مودی سرکار کا عاقبت نا اندیشانہ اقدام مسترد کر دیا ہے اب کشمیر اور کشمیریوں کی آ زادی تک بھارت بند گلی سے باہر نہیں نکل سکتا۔چوہا بِل سے نکل آیا ہے تو واپس نہ جانے پائے۔ایک بار پھر اپیل کرتے ہیں کہ آئیں ہاتھوں کی زنجیر بنا کر دنیا کو بتا دیں مسلمان مسلمان کے لئے کٹ تو سکتا ہے لیکن پشت نہیں دکھاسکتا۔

ایڈیٹرچیف نذر حسین کی زیر نگرانی آپ کی خدمت میں پیش ہے