۔،۔ بھارت۔کشمیر اور پنجاب پرقبضہ ختم کر ے۔ گر چرن سنگھ گورایا۔،۔
۔،۔ دیوار برلن گر سکتی ہے تو وہ دن دور نہیں جب کشمیری آزادی کی فضا میں سانس لیں گے۔،۔
نذر حسین شان پاکستان جرمنی فرینکفرٹ۔ گرچرن سنگھ گورایا نے شان پاکستان سے بات کرتے ہوئے کہا کہ برہان مظفر وانی شہید کی شجاعت اور شہادت ہر مسلمان کے لئے مشعل راہ ہے۔برہان ہانی کی شہادت نے جد و جہد آزادی کشمیر کو نیا ولولہ اور جذبہ عطا کیا ہے۔
پاکستان جرمن پریس کلب کے سینئر نائب صدر نذر حسین کا کہنا تھاکہ جب کشمیری بچہ بولنا سیکھتے ہیں تر لفظ ماں کی جگہ پہلے آزادی بولتے ہیں بحیثیت قوم ہمیں جس نوعیت کے چیلنجز درپیش ہیں ان سے نبر آزما ہونے کے لئے ضروری ہے کہ ہم ذاتی مفاد کی بجائے اجتماعی مفاد کو ہمیشہ اپنے پیش نظر رکھیں، ان کا کہنا تھا کشمیر کی جوانیاں ختم کی گئیں لیکن آزادی کی تڑپ کشمیری نوجوانوں میں کم نہیں ہوئی یہ جذبہ حریت ماند نہیں ہوا صرف اس لئے کہ جب کشمیری بچے بولنا سیکھتے ہیں تو لفظ ماں کی جگہ آزادی پہلے بولتے ہیں۔ یہی وجہ تھی کہ برہان وانی جذبہ ایمانی اور لفظ آزادی کے تحت تن تنہا دشمن کی آٹھ (800000)لاکھ فوج سے ٹکرا گیا۔کشمیریوں کا خون رنگ لانے کو ہے،سکھوں کا بہتا خون بھی رائیگاں نہیں جائے گا۔ گرچرن سنگھ گورایا کا کہنا تھا کہ مودی حکومت کی حالیہ ہونے والی صدارتی غنڈہ گردی بھارت کی بربادی کا نام ہے۔اب کشمیر اور کشمیریوں،خالستان اور سکھوں کی آزادی تک بھارت بند گلی سے باہر نہیں نکل سکتا۔پوری دنیا بھارتی غنڈہ گردی کے خلاف سراپا احتجاج ہے۔۔پاکستان کو سفارتی محاز پر ایک بہت بڑی کامیابی اس وقت ہوئی جب اقوام متحدہ United Nations کے سیکرٹری جنرل Secretary General انتونیو گوٹیرس António Guterres نے دو ٹوک الفاظ Gimmicky words میں دنیا کو واضع کر دیا کہ مقبوضہ کشمیر کے مستقبل کا فیصلہ صرف اور صرف اقوام متحدہ کے چارٹر کے مطابق ہو گا۔ایک قومی ریاست کے تمام افراد کو حق خود ارادیت کا حق حاصل ہے۔آرٹیکل 35Aاے اور آرٹیکل370دوبارہ نافذ ہو گا اور وہ دن دور نہیں جب کشمیری اور سکھ آزادی کا جشن منائیں گے۔٭ دیوار برلن گر سکتی ہے تو وہ دن دور نہیں جب کشمیری آزادی کی فضا میں سانس لیں گے٭

ایڈیٹرچیف نذر حسین کی زیر نگرانی آپ کی خدمت میں پیش ہے