۔،۔ پاکستان جرمن پریس کلب کے تمام عہدہ داران کمیونٹی کے ہر فرد کا شکریہ ادا کرتے ہیں۔نذر حسین۔،۔

شان پاکستان جرمنی فرینکفرٹ۔ پاکستان جرمن پریس کلب فرینکفرٹ اپنے تمام عہدہ داران کے ساتھ پاکستانی کمیونٹی کا مشکور ہے کہ جرمنی میں بسنے والے غَیور مُحِبِ وطن پاکستانیوں اور کشمیریوں نے ایک بار پھر ثابت کر دیا ہے کہ دشمنان پاکستان اور دشمنان کشمیر جب بھی ہمیں للکارنے کی کوشش کریں گے اُن کو منہ کی کھانی پڑے گی اور ہمیں سیسہ پلائی دیوار کی طرح پائیں گے۔جیسے ہی ہمیں اطلاع ملی کہ انڈیا کے ایجنٹوں بلوچستان لبریشن آرمی Balochistan Liberation Armyنے پاکستان اور پاکستانی آرمی کے خلاف احتجاج کی اجازت لے لی ہے ہماری ایک آواز پر۔ توقیر صابری بُٹر۔ جرمنی میں بسنے والے نوجوان طلباء، سید وجیع الحسن، عنصر بٹ، خوشحال خان خٹک، محمد اقبال خان، الحاج افتخار الدین، محمد طفیل بٹ۔ سید حامد شاہ۔ عبد اللطیف چشتی الازہری قاضی حبیب، فاروق بٹ اکرم، مرزا روحیل بیگ زاہد حسین اور عطا الرحمن اشرف۔ غرضیکہ تمام دوست و احباب نے اپنے دوست و اقارب کو مطلع کیا ایک ہفتہ کے دوران خصوصی طور پر میرے ساتھ توقیر صابری بُٹر،سیدحامد شاہ، عنصر بٹ، چوہدری وقار جو اپنے ساتھ پورا ٹیکسی کا عملہ لے کر حاضر ہوئے کثیر تعداد میں وہ کشمیری جو وقت کی قلت کی وجہ سے نہیں آ سکتے تھے سب نے حاضری دی اور پی۔ٹی۔آئی کے ورکرز نے دن رات کی محنت سے کثیر تعداد میں کمیونٹی کے افراد کو اکٹھا کر لیا جیسا کے آپ نے دیکھا ہو گا کہ پاکستان کے دشمن ہمارے سامنے نہ جم سکے بالآخر میدان چھوڑ کر بھاگ گئے یہ ہی ہماری کامیابی تھی۔ہم نے یہ ثابت کر دیا کہ ہم پاکستان کی سلامتی پر آنے والی ہر آنچ کو اپنے سینہ پر سہنے کے لئے تیار ہیں، وطن کی آن کے لئے کٹنے کو بھی تیار ہیں۔ ہم ایک بار پھر جرمنی میں بسنے والی پاکستانی کمیونٹی کا شکریہ ادا کرتے ہیں۔ آپ کو بتا دینا چاہتے ہیں کہ بھارتی زر خرید غلام۔بھارتی کرائے کے ٹٹو وں نے 3گھنٹے احتجاج کرنے کی اجازت لی تھی مگر غَیُور پاکستانیوں اور کشمیری مجاہدوں نے ان کی آواز قونصل خانہ کی دیواروں سے بھی نہ ٹکرانے دی۔پولیس کے بار بار منع کرنے کے باوجود ہمارے نوجوان بار بار سڑک کے کنارے آ کر دشمن کے نعروں کو وہیں تک محدود کر دیتے تھے،اُن کی آواز جب دب چکی تو ان کو بھاگنے کے علاوہ کوئی راستہ نہ ملا اپنا بوریا بسترہ اُٹھاکر بھاگ گئے۔

ایڈیٹرچیف نذر حسین کی زیر نگرانی آپ کی خدمت میں پیش ہے