۔،۔ جرمنی میں بسنے والی کمیونٹی نے مُحِبِ وطن ہونے کا ثبوت دے دیا۔نذر حسین۔،۔

نذر حسین جرمنی فرینکفرٹ۔جرمنی میں بسنے والے پاکستانیوں نے مُحِبِ وطن ہونے کا ثبوت دے دیا،دشمنان پاکستان اور دشمنان کشمیر کی اپنی چالیں انہی پر الٹ دی جا رہی ہیں، جہاں جہاں نریندر مودی کے ناپاک قدم پڑتے ہیں وہیں پر احتجاجی مظاہرے شروع ہو جاتے ہیں۔اُسی انڈیا کے ایجنٹوں بلوچستان لبریشن آرمی Balochistan Liberation Army جن میں را RAW کے ایجنٹ بھی شامل ہوتے ہیں اس کے ساتھ ساتھ Rashtriya Swayamsevak Sangh کے  غنڈ   ےبھی ہوتے ہیں نے جرمنی قونصلیٹ جنرل آف پاکستان کے سامنے احتجاجی مظاہرے کی اجازت لی اطلاع ملتے ہی آناََ فاناََ پاکستان جرمن پریس کے علاوہ کمیونٹی کی     سیاسی سماجی شخصیت،پاکستان ایسوسی ایشن کے صدر سیدوجیہہ الحسن، توقیر بٹر،سید حامد شاہ                               اور عنصر بٹ                  نے محب وطن پاکستانی  بھائیوں کو پکارا۔ کمیونٹی کے افراد نے فرداََ فرداََ دوست و احباب کو مطلع کر دیا کہ مورخہ 25اگست 2019بوقت11:00 Uhrبجے دشمنان پاکستان، پاکستان کوللکارنے اکٹھے ہو رہے ہیں ورکنگ ڈےworking day ہونے کے باوجود مُحِبِ وطن پاکستانی 10:00 Uhrبجے ہی آنا شروع ہو گئے اور دیکھتے ہی دیکھتے قونصلیٹ کے احاطہ میں کثیر تعداد میں افراد اکٹھے ہو گئے، جب 11:00 بجے دشمنان پاکستان آئے تو پریشان ہو گئے کہ ہم تو ٹوٹل تیس افراد ہیں اور یہاں تو سیکڑوں پاکستانی، پاکستانی جھنڈوں کے ساتھ موجود ہیں مودی کا جو یار ہے غدار ہے غدار ہے،کشمیر بنے گا پاکستان، پاکستان زندہ باد، پاک آرمی زندہ باد کے نعروں سے استقبال کر رہے ہیں BLA۔میں RSSکے افراد بھی نظر آ رہے تھے لیکن پھر کیا تھا دشمنان پاکستان کے نعرے پاکستانیوں کے نعروں میں سنائی نہ دے سکے وہ وقت سے پہلے ہی اپنا احتجاج سمیٹ کر چل پڑے،پاکستانی کمیونٹی کو دیکھ کر ان کی امیدوں پر پانی پِھر گیا کیونکہ ان کو پہلی بار ایسی صورتحال کا سامنا کرنا پڑ گیا تھا۔یہاں پر پاکستان جرمن پریس کلب Pakistan German Press Clubقائم مقام قونصل جنرل آف پاکستان۔ ہیڈ آف جانسلری head of the chancellery شعیب منصور کے جرآت مندانہ اقدام پر مبارک باد پیش کرتا ہے اور ان کا شکریہ ادا کرتا ہے کہ ہمیں برقت اطلاع کر دی۔ دنیا ہمارا ساتھ دے نہ دے ہم کشمیریوں کے لئے آخری حد تک جائیں گے۔نریندر مودی جو ہندو قوم پرستی کا پرچار کرتا ہے کو نہ صرف دنیا بھر بلکہ اپنے ملک بھارت میں بھی ذلت و رسوائی اور شرمندگی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ جہاں جہاں اس کے ناپاک قدم پڑتے ہیں وہیں پر احتجاجی مظاہرے شروع ہو جاتے ہیں۔گولڈن ٹمپل goldener tempel سے بھی کشمیریوں کی مدد کے لئے ہدایات جاری کر دی گئی ہیں،بھارت میں بسنے والے ہندو ں کا کہنا ہے کہ اگر ہم اپنے دیس میں بسنے والے مسلمانوں کے ساتھ ایسا ناروا سلوک کریں گے تو کل مسلمان بھی ہمیں گاوُ ماتا کا گوشت کھانے پرمجبور کریں گے ہم سے بھی وہ اللہ و اکبر کے نعرے لگوائیں گے جو لوگ مودی کے کہنے پر مسلمانوں پر ظلم و ستم کرتے ہیں ان لوگوں کا دل و دماغ مر چکا ہے ان کا کہنا ہے کہ پورا دیس چپ ہے کیا یہی ہمارا ضمیر ہے کیا دیش وادیوں کا سن کر خون نہیں کھولتا کے بھری سڑک پر مسلمانوں کو زندہ جلایا جا رہا ہے ڈنڈے مار مار کر مسلمانوں کے سر پھوڑے جا رہے مجبور عورتوں کی عزتیں لوٹی جا رہی ہیں آج Rashtriya Swayamsevak Sangh کے غنڈے مسلمانوں کو مار رہے ہیں تو کل غیر مسلم کے ساتھ بھی یہی سلوک کیا جائے گا کیا یہی آج کی سیاست ہے۔مجھے پرائے شعلوں کا ڈر نہیں۔ مجھے خوف آتش گُل سے ہے۔یہ کہیں چمن کو جلا نہ دے۔ یہ بات بھارت میں رہنے والوں کے لبوں پر ہے۔ 370کے خاتمے کے بعد دنیا کے دانشوروں کا کہنا ہے کہ اب پاکستان کو کچھ کرنے کی ضرورت نہیں اب مودی ہی سب کچھ کرے گا بھارت کو تباہ کرنے کے لئے اکیلا مودی ہی کافی ہے۔بھارتی معیشت تباہی کے دہانے تک پہنچ چکی ہے سرمایہ کار بھارت میں رقم انوسٹ کرنے سے ڈر رہے ہیں اور کئی لوگ صرف اس خوف سے ملک چھوڑ کر بھاگ رہے ہیں ان کو خدشہ پیدا ہو گیا ہے کہ بھارت میں خانہ جنگیcivil war شروع ہوجائے گی Rashtriya SwayamsevaRahtriya Sanghکے غنڈے نہ صرف کشمیر بلکہ ہر جگہ پر پھیلا دیئے گئے ہئں جو اب بھی انڈیا کے کارخانوں جہاں پر گائے کی کھال سے مختلف اشیاء بنائی جاتی ہیں حملہ کر کے تباہ کر رہے ہیں،وہی غنڈے ہالی وُڈ اور بولی وُڈ کی اہم شخصیات کو بھی دھمکیاں دے رہے ہیں۔پاکستان جرمن پریس کلب کے صدر سلیم پرویز بٹ کا کہنا تھا کہ۔ لگے گی آگ تو آئیں گے گھر کئی زد میں۔ یہاں پہ صرف ہمارا مکان تھوڑی ہے۔ ہمارے منہ سے جو نکلے وہی صداقت ہے۔ ہمارے منہ میں تمہاری زبان تھوڑی ہے۔ اختتام پر تمام مُحِبِ وطن کو کھانا پیش کیا گیا جس کا اہتمام پاکستان جرمن پریس کلب نے کیا تھا۔

ایڈیٹرچیف نذر حسین کی زیر نگرانی آپ کی خدمت میں پیش ہے