۔،۔ ہم ہیں پاکستان کے زیر اہتمام جرمنی کے شہر ڈارم سٹڈٹ میں یوم یکجہتی کشمیر کا اہتمام۔،۔

شان پاکستان جرمنی ڈارم سٹڈٹ۔ ہم ہیں پاکستان کے زیر اہتمام ایک جلسہ کا انعقاد کیا گیا جس کے مہمان خصوصی قائم مقام قونصل جنرل شعیب منصور تھے ان کے علاوہ۔ ایس۔پی۔ڈی۔ کی سابقہ امیدوار نیشنل اسمبلی ہائیکے ہوف مان Frau Heike Hoffman سابقہ ممبر صوبائی اسمبلی اور سٹیفان گیٹر Stephan C. Geter جو وائٹر سٹڈٹWeiterstadtکے منتخب کونسلر بھی ہیں نے شرکت کی۔پروگرام کی نظامت اسد اللہ طارق نے کی۔ خواجہ خالد نے مسئلہ کشمیر پر انگریزی میں خطاب کیا، محمد علی نے کشمیر میں ہونے والے مظالم پر تفصیلی بات کی، حبیب الرحمن قاضی نے جرمن میں بات کرتے ہوئے حاضرین محفل کو یہ باور کروایا کہ کشمیر کو دنیا کی سب سے بڑی جیل میں منتقل کر دیا گیا ہے،قانون کی دھجیاں بکھیر دی گئی ہیں،سابقہ امیدوار نیشنل اسمبلی Frau Heike Hoffmann SPD نے کشمیر میں ہونے والے مظالم اور بھارت کی ریاستی دہشتگردی کی پر زور مذمت کی ہے،ان کا مزید کہنا تھا کہ میں وعدہ کرتی ہوں کہ سوشل ڈیموکریٹک پارٹی Sozialdemokratische Partei Deutschlands(SPD)
کی ہائی کمان اور جرمنی کے وزیر خارجہ سے خود مسئلہ کشمیر پر بات کروں گی،Stephan C. Geterنے کشمیر میں کشمیریوں پر ہونے والے ظلم و ستم کی شدید مذمت کی اور دُکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ کشمیریوں کو اپنی مرضی سے جینے کا حق ہے اور انہیں ملنا چاہیئے ان کا مزید کہنا تھا کہ کشمیر میں گھروں کے گھر جلا دیئے گئے جس کی ہم مذمت کرتے ہیں یوم یکجہتی کشمیر کے موقع پر کشمیر میں ہونے والی بربریت کے خلاف آواز اُٹھاتے ہیں۔ قائم مقام قونصل جنرل شعیب منصور نے اپنے خطاب میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر تشویش کا اظہار کیا، انہوں نے خصوصی طور پر Frau Heike Hoffmann SPD،اور Stephan C. Geter کو اس بات سے آگاہ کیا کہ مورخہ 5اگست سے مقبوضہ کشمیر میں کرفیو لگا ہوا ہے بچے بھوک سے بلک رہے ہیں عورتوں کی عصمت دری کی جا رہی ہے انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں کی جا رہی ہیں، ان کا کہنا تھا کہ کشمیر میں کشیدہ صورت حال ہے مواصلاتی نظام معطل ہونے کی وجہ سے دنیا بھر سے کشمیر کا رابطہ منقطع ہو چکا ہے۔ مسلمانوں کو نماز جمعہ سے روکا جاتا ہے۔ جلسہ کے اختتام پر محمود سعید نے مہمانو ں کا شکریہ ادا کیا۔

ایڈیٹرچیف نذر حسین کی زیر نگرانی آپ کی خدمت میں پیش ہے