۔،۔ کرتارپور راہداری سے ایشیاء میں امن کی آبیاری ہوگی: نویدشاہ۔،۔
بھار تی نفرت کے باوجودپاکستان نے پائیدار امن کیلئے بڑے پن کامظاہرہ کیا

مسلم سٹوڈنٹس فیڈریشن کے سابقہ رہنماؤں کی عالمی رابطہ کونسل کے مرکزی کنوینر اورسابق صدرلاہورڈویژن نویدشاہ نے کہا ہے کہ کرتارپور راہداری پاکستان کی بہترین سفارت کاری ہے،اس اقدام سے یقینا ایشیاء میں امن کی آبیاری ہوگی۔پاکستان نے کرتارپورراہداری کی صورت میں مذہبی رواداری کاشاندار مظاہرہ کردیا،اب بھارت کی باری ہے۔اگرمودی سرکارامن کی داعی اورانسانیت کی فلاح کیلئے سنجیدہ ہے تواسے شہیدبابری مسجدکی دوبارہ تعمیر اورکشمیر کی آزادی سے بھارتی مسلمانوں کے زخم پرمرہم رکھنا ہوگا۔ بھار تی نفرت اورتعصب کے باوجودپاکستان نے قیام امن کیلئے بڑے ظرف اوربڑے پن کامظاہرہ کیا۔۔وہ پاکستانیوں کے ایک اجتماع سے خطاب کررہے تھے۔نویدشاہ نے مزید کہا کہ سکھ ایک غیورقوم ہے جو پاکستان کے صادق جذبوں کی ہرگزناقدری نہیں کرسکتی۔یقینا اب سکھ رضاکارانہ طورپرپاکستان اورکشمیر کی سفارت کاری کریں گے۔ایک طرف بھارت ہے جہاں سات دہائیوں میں کشمیریوں سمیت کئی ملین مسلمانوں اورتاریخی بابری مسجد کوشہیدکردیا گیا اوردوسری طرف پاکستان ہے جس کوسکھ قوم کے لوگ جنت قراردے رہے ہیں۔کرتارپورراہداری سے سنی دیول کی سوچ میں بھی مثبت تبدیلی آگئی اورانہوں نے بھارت واپسی پردشمنی دفن کرتے ہوئے امن اور دوستی کی نویدسنادی جوخوش آئند ہے۔کرتارپورراہداری کاخواب شرمندہ تعبیرہونے پرلنک روڈ ماڈل ٹاؤن میں ”جشن امن ”منایاگیا اوربرصغیرسمیت دنیا بھرمیں پائیدارامن وآشتی کے فروغ کیلئے خصوصی اجتماعی دعا کی گئی کرتارپور کوریڈورکے دوررس اثرات اورثمرات منظرعام پرآئینگے۔پاکستان نے سودوزیاں کی پرواہ نہ کرتے ہوئے انتہائی نیک نیتی کے ساتھ ِسکھ قوم کی ان کے مقدس مقام پرباآسانی رسائی یقینی بناتے ہوئے سُکھ کاتحفہ دیا۔ کرتارپورراہداری کے افتتاح کی پروقارتقریب میں شریک سکھ حضرات کی خوشی قابل دیدتھی۔امید ہے مودی سرکار کی طرف سے سات دہائیوں سے معتوب اورکئی ماہ سے یرغمال کشمیریوں کوبھی سُکھ ملے گا۔انہوں نے کہا کہ مسلم سٹوڈنٹس فیڈریشن اپنے کشمیری بھائی بہنوں کوہرگزتنہااورانتہاپسندمودی کے رحم وکرم پرنہیں چھوڑے گی۔

ایڈیٹرچیف نذر حسین کی زیر نگرانی آپ کی خدمت میں پیش ہے