-،-مختلف مذاہب کے پلیٹ فارم سے یہاں برلن مئیر کے مین ٹاون ہال میں ایک کانفرنس منعقد کی گئ،مہ وش خان -،-

مہ وش خان      -Different Religions in Berlin -مختلف مذاہب کے پلیٹ فارم سے یہاں برلن مئیر کے مین ٹاون ہال میں ایک کانفرنس منعقد کی گئ۔جس میں یہاں موجود                                          تمام  چھوٹے بڑے مذاہب جن مسلم،عیسائ،یہودی،سکھ،                                                                                                                    ہندو و دیگر چھوٹے مذاہب کے نمائندوں نے شرکت کی۔اس کے علاوہ سیاسی شخصیات میں کلچرل منسٹر نے بھی شرکت کی کانفرنس کا مقصد تھا کہ کس طرح سے ان مختلف مذاہب کے ماننے والوں کے درمیان ہم آہنگی و بھائ چاری پیدا کی جائے۔کانفرنس میں شدت پسندی کو بھی خاص کر موضوع بحث بنایا گیا اور مذہب اسلام کے خوبصورت پہلوؤں پر بھی روشنی ڈالی گئ۔ئہاں کام کرنے والی ایک مسلم تنظیم IBMUSکے سربراہ کا اس بارے میں کہنا تھا کہ۔۔اس وقت دنیا میں بڑھتی ہوئ شدت پسندی کو روکنے کے لئے اس قسم کی کانفرنسز کا انعقاد ضروری ہے کہ جہاں ایک مشہور چرچ کا پادری مذہب اسلام کی اچھائیوں و مثبت پہلو اجاگر کررہا ہو۔سکھ کمیونٹی سے تعلق رکھنے والے افراد نے کہا کہ دنیا کا ہر مذہب امن کی بات کرتا ہے اور اس قسم کی کانفرنسز یقینا دنیا میں امن قائم کرنے کے لئے انتہائ اہم کردار ادا کرتی ہیں۔کانفرنس میں اس وقت دنیا میں مختلف مذاہب کے پیش نظر رونما ہونے والے حالات واقعات کے بارے میں بات چیت ہوئ۔اس کے علاوہ ماحولیاتی آلودگی کو تمام مذاہب مل کر کس طرح کنٹرول کرسکتے ہیں یہ نقطہ بھی زیر بحث آیا۔                                     جنگ عظیم دوئم میں نشانہ بننے والے مشہور چرچ کے پادری نے شدت پسندی اور اسلام مخالف پروپیگنڈے پر میڈیا کے منفی کردار کو بھی تنقید کا نشنہ بنایا۔

ایڈیٹرچیف نذر حسین کی زیر نگرانی آپ کی خدمت میں پیش ہے