۔،۔کیا کسی بھی اسلامی ملک میں بائبل، انجیل یا تورات کو جلانے کی اجازت دی جائے گی۔نذر حسین۔،۔
۔،۔ ناروے میں قرآن پاک کی بے حرمتی کرنے والے ملعون شخص پر حملہ کرنے والے نوجوان کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں۔سلیم پرویز بُٹ، نذر حسین-،-

شان پاکستان جرمنی فرینکفرٹ۔ دو روز قبل ناروے Norwayکے شہر کرسٹیان سینڈ Kristiansandمیں توہین قرآن کا افسوسناک واقعہ پیش آیا، پاکستان جرمن پریس کلب کے صدر سلیم پرویز بُٹ، نذر حسین ناروے کے شہر کرسٹیان سینڈ میں قرآن پاک کی توہین اور قرآن پاک کو جلانے کی مذموم کوشش کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں، یورپین Europeanاور سکینڈے نیوینSkandinavien ملکوں میں بھی ریلی کی پوری تفصیل اور راستہ متعین کرنا پڑتا ہے ایسے میں پولیس اس واقعہ کی ذمہ دار ہے۔ پولیس کو اس بات کا علم تھا کہ یہ پارٹی اسلام مخالف تنظیم سیان Norway, far-right group SIAN ہے۔ا س کے باوجود ریلی ارکان نے قرآن پاک کی بے حرمتی کی اور پولیس خاموش تماشائی بنی رہی۔ اس موقع پر وہاں موجود مسلمان اس توہین قرآن کو برداشت نہ کر سکے اور الیاس نامی نوجوان نے قرآن پاک جلانے والے ملعون شخص لارس تھورسنLars Thorsen پر حملہ کر دیا۔ پاکستان جرمن پریس کلب اور شان پاکستان جرمنی کے تمام ارکان دل کی گہرائیوں سے مسلمانوں کے ہیرو الیاس کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں،اسلام دہشت گرد مذہب نہیں ہے مگر جب ان کے جذبات سے کھیلا جائے گا تو یہ سب کچھ بھی ہو گا، اسلام ہمیں اس بات کی اجازت نہیں دیتا کہ ہم کسی مذہب کی کتاب کو سرعام جلائیں، قرآن پاک، تورات، انجیل بھی رسولوں پر اتاری گئی تھیں، مگر کوئی بھی مسلمان کسی مذہبی کتاب کی توہین برداشت نہیں کرے گا۔نہ صرف پاکستان جرمن پریس کلب بلکہ پوری جرمنی میں بسنے والے مسلمان ناروے Norwayکے شہر کرسٹیان سینڈKristiansand میں قرآن پاک کی توہین اور قرآن پاک کو جلانے کی مذموم کوشش کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں۔
حقیقت میں بہادر نوجوان الیاس نے مسلمان ہونے کا حق ادا کر دیا۔

ایڈیٹرچیف نذر حسین کی زیر نگرانی آپ کی خدمت میں پیش ہے