۔،۔ جرمنی کی بندرگاہیں کوکین میں تیرتی نظر آ رہی ہیں، ریکارڈ 10 ٹن کوکوکین پکڑی گئی۔نذر حسین۔،۔

شان پاکستان جرمنی ویسبادن۔ جرمن سیکورٹی حکام کی رپورٹ کے مطابق پہلی بار اس سال دس ٹن(10 tone)سے زیادہ کوکین محفوظ (پکڑی) کی گئی ہے، پولیس اور کسٹم حکام کوکین سمگلنگ کے خلاف اپنی نئی حکمت عملی کو اپنانا چاہتے ہیں۔ جرمنی میں پہلی بار تفتیش کاروں نے دس ٹن (10 tone)سے زیادہ کوکین ضبط کی ہے،فیڈرل کرائم برنچ پولیس آفس۔بی۔کے۔اے۔ (BKA)Federal Criminal Police Officeکے ڈائریکٹر کرسچین ہوپ Christian Hoppe کا کہنا تھا کہ 2019میں جرمنی کی بندر گاہیں کوکین میں تیرتی نظر آ رہی ہیں،ان کا کہنا تھا کہ حالیہ برسوں میں منشیات کی ضبط شدہ مقدار میں بڑے پیمانے پر اضافہ ہوا ہے،2014 میں اسمگل کی گئی کوکین کی مقدار1,5 Tonne تھی۔ اضافہ کی وجہ جنوبی امریکا میں کوکین کے کاشت کار پیداوار میں نمایاں اضافہ کرنے میں کامیاب رہے ہیں، جنوبی امریکا سے اپنی منشیات کو یورپی منڈی میں بندر گاہوں کے ذریعہ سمگل کیا جاتا ہے،خاص کر جرمنی سے ہالینڈ، بلجیئم، برطانیہ، اٹلی اور دوسرے یورپین ملکوں میں سمگل بہ آسانی کی جاتی ہے۔۔ (BKA)Federal Criminal Police Officeکے مطابق کوکین کارکیٹ میں منشیات فروشوں میں بڑھتی ہوئی تشدد، قتل و غارت گری عصمت دری دیکھی جا رہی ہے، جرائم میں اضافہ ہو رہا ہے، ان کا کہنا تھا کہ اتنی بڑی مقدار میں کوکین پکڑنے کے بعد بھی نہ تو قیمتوں میں کمی آئی اور نہ ہی کوکین مارکیٹ میں کم ہوئی اس سے اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ اتنی بڑی مقدار میں کوکین ضبط کرنے کے باوجود مافیا کو کوئی فرق نہیں پڑتا۔ جنوبی امریکا سے اس بار سپورٹس کے بیگز میں کوکین سمگل کرنے کی کوشش کی گئی تھی جبکہ کچھ عرصہ پہلے جنوبی امریکا سے آنے والے کیلوں کے ڈبوں میں کو کین سمگل کرنے کی کوشش کو ناکام بنا دیا گیا تھا۔

ایڈیٹرچیف نذر حسین کی زیر نگرانی آپ کی خدمت میں پیش ہے