۔،۔ سانحہ پی آئی سی بدترین بدانتظامی کاشاخسانہ ہے: الطاف شاہد۔،۔
کپتان اوران کے حواریوں نے امورحکومت سیکھتے سیکھتے عوام سے ان کا سکھ چین چھین لیا

پاک سر زمین پارٹی برطانیہ کے صدرچوہدری محمد الطاف شاہد نے کہا ہے کہ سانحہ پی آئی سی بدترین بدانتظامی کاشاخسانہ ہے،پنجاب حکومت اورمقامی پولیس انتظامیہ نے اس معاملے کو مس ہینڈل کیا۔وکلاء کاگروپ طویل فاصلہ پیداطے کرتے ہوئے پی آئی سی پہنچا اس دوران پولیس نے ضروری حفاظتی اقدامات کیوں نہیں کئے۔حکمران جماعت کے کپتان اپنے ٹیم ممبرز کے ہمراہ مستعفی ہوجائیں کیونکہ کپتان سے ٹیم ممبرز تک سبھی کھلاڑی انتہائی اناڑی مگراقتدار کے پجاری ہیں۔حکمرانوں کی نااہلی سے بار بار پاکستان کی جگ ہنسائی ہوتی ہے، عمران خان اوران کے حواریوں نے امورحکومت سیکھتے سیکھتے عوام سے ان کا سکھ چین چھین لیا۔اس فتنہ پرورڈاکٹرکوقرارواقعی سزادی جائے جس کی تقریرنے جلتی پرتیل کاکام کیااوروکلاء مشتعل ہوئے۔پولیس اہلکار شروع میں وکلاء اورڈاکٹرزکے درمیان خونی تصادم کاتماشا دیکھتے رہے اورپھر آنسوگیس کے شیل استعمال کئے مگر یہ بھی نہ سوچا کہ ان سے دل کے مریضوں پرکیا گزرے گی۔ وہ ایک اعلیٰ سطحی اجلاس سے خطاب کررہے تھے۔ چوہدری محمد الطاف شاہد نے مزید کہا کہ پسندناپسندکی بنیادپرلاہورپولیس کی سطح پرہونیوالے حالیہ تبادلے پنجاب حکومت کے گلے پڑگئے،سی سی پی اواورڈی آئی جی آپریشنز ان عہدوں کیلئے موزوں نہیں ہیں۔عمران خان صرف وزیراعظم نہیں بلکہ پنجاب کی وزرات اعلیٰ بھی ان کے پاس ہے جبکہ عثمان بزدار محض خانہ پری ہیں۔ انہوں نے کہا کہ لوگ کسی اناڑی کواپناسائیکل نہیں دیتے یہاں 22کروڑعوام کاملک اناڑیوں کے سپردکردیاگیا ہے۔تعجب ہے وزیراعظم عمران خان پنجاب کے شعبدہ بازوزیراطلاعات کووزارت سے سبکدوش کرنے کی بجائے الٹاشاباش دے رہے ہیں۔وفاق سے پنجاب تک پی ٹی آئی کے حکمرانوں کوولن سمجھاجاتا ہے مگر وہ بار بار ہیروبننے کی ناکام کوشش کرتے ہیں۔

ایڈیٹرچیف نذر حسین کی زیر نگرانی آپ کی خدمت میں پیش ہے