۔،۔ لاہور قلعہ گجر سنگھ میں کانسٹیبل نے ڈی آئی جی شہزاد اسلم صدیقی کو چھریاں مار کر زخمی کر دیا۔،۔

شان پاکستان لاہور گجر سنگھ۔ لاہور لائنز قلعہ گجر ساگھ میں پولیس کانسٹیبل نے ڈانٹنے پر۔ڈی۔آئی۔جی۔ Deputy inspector generalشہزاد کمال کو چاقو سے حملہ کر کے زخمی کر دیا۔ ڈی۔آئی۔جی شہزاداسلم صدیقی چھریاں اور سر پر چوٹ لگنے سے زخمی ہوئے،پولیس نے حملہ آور کو حراست میں لے کر مقدمہ درج کر لیا ہے،اطلاع کے مطابق مبینہ ڈانٹ ڈپٹ پر Deputy inspector general پر حملہ کرنے والا اہلکار مرگی کا مریض نکلا، رپورٹ کے مطابق کانسٹیبل رفیق کبھی DIGکے ساتھ تعینات ہی نہیں تھا ملزم کی پوسٹنگ حال ہی میں انوسٹی گیشن ونگ سے پولیس لائنز میں ہوئی تھی بتایا گیا ہے کہ ملزم مرگی کے مرض میں مبتلا تھا جس کی وجہ سے اکثر ڈیوٹی سے غیر حاضر بھی رہتا تھاجبکہ شہزاداسلم صدیقی کے بیان میں ان کا کہنا تھا کہ ڈانٹنے کی بات میں کوئی صداقت نہیں ہے، ان کا کہنا تھا کہ میں ملزم کو جانتا تک نہیں ان کا مزید کہنا تھا کہ ملزم نے آ کر باقاعدہ سلام کیا اور چاقو سے حملہ کر دیا اور پے در پے وار کئے، ان کا کہنا تھا کہ اگر ملزم واقعی بیمار ہے تو معاف کر دوں گا، ان کا کہنا تھا کہ میں ڈیوٹی سے گھر جا رہا تھا کہ ملزم نے حملہ کیا تھا،جس پر پولیس نے ملزم کو حراست میں لے کر دفعہ 340 اقدام قتل کے تحت مقدمہ درج کر لیا۔اسپتال ذرائع کا کہنا ہے کہ ڈی آئی جی کی حالت خطرے سے باہر ہے جس کے بعد انہیں ڈسچارج کردیا گیا، بعد ازاں بلڈپریشرکم ہونے پر دوبارہ داخل کرلیا گیا اور پھر طبیعت بہتر ہونے پر انہیں دوبارہ گھر منتقل کردیا گیا۔

ڈی آئی جی شہزاد اسلم صدیقی

ایڈیٹرچیف نذر حسین کی زیر نگرانی آپ کی خدمت میں پیش ہے