۔،۔ آسٹریلیا میں پائے جانے والے جنگلی اونٹوں کو ہلاک کرنے کا پروگرام شروع۔،۔

شان پاکستان آسٹریلیا۔ آسٹریلیا میں باقاعدہ طور پر دس ہزار اونٹوں کو گولیاں مارنے کا حکم جاری کر دیا گیا، اونٹوں کو ہلاک کرنے کا یہ پانچ روزہ پروگرام آسٹریلیا کے جنوب میں شروع ہو چکا ہے اس علاقہ میں مقامی قبائل کے تقریباََ 2300افراد آباد ہیں رپورٹ کے مطابق اونٹوں کو ہیلی کاپٹر وں پر بیٹھے نشانچی گولیاں مار رہے ہیں، آسٹریلیا کے جنوبی علاقوں میں قحط سالی جاری ہے جس کی وجہ سے جنگلی اونٹ پانی اور خوراک کی تلاش میں مقامی دیہاتوں تک آ پہنچے ہیں سرکاری اہلکاروں کا کہنا ہے کہ اونٹ پانی کی سپلائی لائنوں اور بنیادی ڈھانچے کو نقصان پہنچا سکتے ہیں، ایگزیکٹو کمیٹی کے مطابق یہی وجہ ہے کہ 10000 تک اونٹوں کو ہلاک کرنے کی منظوری دی گئی ہے۔ اے پی وائے لینڈ کے جنرل مینیجر نے نیوز ایجنسی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پہلے ہی دن تقریباََ1500 اونٹوں کو ہلاک کر دیا گیا ہے۔علاقے میں جاری شدید گرمی اور قحط سالی کی وجہ سے اس خطے کی مسائل بڑھ چکے ہیں اور پانی کی تلاش میں اونٹ ایک دوسرے کو بھی روندتے چلے جاتے ہیں۔ ساؤتھ آسٹریلیا انوائرمنٹ ڈیپارٹمنٹ کے ترجمان کا کہنا تھا، ”کچھ واقعات میں مردہ جانوروں کی وجہ سے پانی کے ذخائر آلودہ ہوئے ہیں اور کچھ ثقافتی مقامات بھی متاثر ہوئے ہیں۔‘‘آسٹریلیا کے محکمہ موسمیات نے جمعرات کو اعلان کیا ہے کہ سن 2019 آسٹریلیا کی تاریخ کا گرم اور خشک ترین سال تھا۔ آسٹریلیا میں اونٹوں کو ایک ایسے وقت میں ہلاک کیا جا رہا ہے، جب ملک کے دیگر حصوں میں لگنے والی جنگلاتی آگ نے کئی ملین ایکڑ رقبے پر لگے جنگلات کو جلا کر راکھ کر دیا ہے۔ اس جنگلاتی آگ کی وجہ سے کم از کم ستائیس افراد ہلاک اور ہزاروں گھر تباہ ہوئے ہیں۔اونٹ آسٹریلیا کے مقامی جانور نہیں ہیں۔ انہیں انیسویں صدی کے وسط میں یہاں لایا گیا تھا۔ اب دنیا میں سب سے زیادہ جنگلی اونٹ آسٹریلیا میں پائے جاتے ہیں۔ اندازوں کے مطابق ان کی تعداد تقریبا ایک ملین ہے اور یہ کسی بھی شخص کی ملکیت نہیں ہیں۔

ایڈیٹرچیف نذر حسین کی زیر نگرانی آپ کی خدمت میں پیش ہے