۔،۔ قونصلیٹ جنرل آف پاکستان فرینکفرٹ میں یوم یکجہتی کشمیر کا سہ روزہ اہتمام کیا گیا۔نذر حسین۔،۔

شان پاکستان جرمنی فرینکفرٹ۔ قائم مقام قونصل جنرل آف پاکستان، ہیڈ آف چانسلری شعیب منصور نے کمیونٹی کے مشورے اور خواہش کو مد نظر رکھتے ہوئے اور قانونی کاروائی کے تقاضوں کو پورا کرتے ہوئے بسلسلہ یوم یکجہتی کشمیر سہ روزہ پروگرام کا انعقاد کیا جس کا سلسلہ باقاعدہ طور پر 4 فروری کو شروع کر دیا گیا تھا مرد و خواتین نے قونصلیٹ کے باہر لگے سٹینڈ پر آ کر موم بتیاں جلا کا کشمیری بہنوں اور بھائیوں کے ساتھ اظہار یک جہتی کیا 5فروری2020 بروز بدھ شام 17:00 Uhrبجے قونصلیٹ جنرل آف پاکستان فرینکفرٹ میں پاکستانی کشمیری و جرمن کمیونٹی نے حصّہ لے کرشہداء کشمیر کی یاد میں قونصل خانہ کے باہر میزوں پر پڑی شمعیں روشن کر کے ثابت کر دیا کہ ہم مظلوم کشمیری عوام کی آواز بن کر عالمی ضمیر کو جھنجھوڑ سکتے ہیں، ہم کشمیریوں پر بھارتی افواج کے ذریعہ انسانی حقوق کی پامالیوں کے خلاف، کشمیر میں کشمیری بہنوں اور بھائیوں پر ہونے والے ظلم و بربریت کے خلاف آواز اُٹھا سکتے ہیں۔قائم مقام قونصل جنرل آف پاکستان شعیب منصور نے بھی شمع روشن کی،ڈپٹی ڈائریکٹر امیگریشن اینڈ پاسپورٹ Deputy Director Immigration & Passport فواد انور بھٹی نے صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی کا پیغام پڑھ کر سنایا،صدر پاکستان کے پیغام میں یہ بات واضع تھی کہ ہم مقبوضہ جموں و کشمیر کے بہادروں کے ساتھ یکجہتی کا اعلان کرتے ہیں،5 اگست2019 کو ہندوستان نے اقوام متحدہ کی سلامتی قونصل کی قراردادوں کی براہ راست خلاف ورزی کی ہے، جب تک کشمیر ہندوستان کے چنگل سے آزاد نہیں ہوتاپاکستان ہر فورم پر جموں و کشمیر کا مسئلہ اُٹھاتا رہے گا، پاکستان کشمیری عوام کی سیاسی،اخلاقی اور سفارتی حمایت کرتا رہے گا،قائم مقام قونصل جنرل آف پاکستان Council General of Pakistan شعیب منصور نے وزیر اعظم عمران خان کا پیغام پڑھ کر سنایا، وزیر اعظم عمران خان کے پیغام میں ان کا کہنا تھا کہ آج پوری دنیا میں یوم یکجہتی کشمیر منایا جا رہا ہے،6ماہ 185دن سے کشمیر میں غیر انسانی لاک ڈاوُن،کشمیری کے لئے مواصلاتی ناکہ بندی نے ہندوستانی جمہوریت کو پوری طرح سے بے نقاب کر دیا ہے، انسانی حقوق کی بڑی تنظیموں، بین الاقوامی میڈیا نے بھارت کے ناقابل مذمت اقدام کی کھلے عام مذمت کی ہے، بھارتی عسکریت پسندی کے بیانات اور جارحانہ اقدامات سے پیدا ہونے والے عالمی امن و سلامتی کے لئے شدید سنگین خطرات پیدا کر دیئے ہیں۔مقبوضہ کشمیر، مقبوضہ ہندوستانی عوام کے ساتھ اٹل یک جہتی کا اظہار کرتے ہیں اور یقین دلاتے ہیں کہ پاکستان ان کے ساتھ ہمیشہ کندھے سے کندھا ملا کر کھڑے ہیں، قائم مقام قونصل جنرل آف پاکستان، ہیڈ آف چانسلری شعیب منصور نے شرکاء کا شکریہ ادا کیا ان کا کہنا تھا کہ میں شکر گزار ہوں کہ نہ صرف فرینکفرٹ بلکہ جرمنی کے دور دراز علاقوں سے کثیر تعداد میں کمیونٹی نے حصّہ لیا ان کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان اور پاکستانیوں کی کشمیر سے محبت میں کوئی کمی نہیں آئی پاکستانی عوام کشمیریوں کی ہر سطح پر اخلاقی اور سفارتی حمایت جاری رکھے گا اور وہ دن دور نہیں جب کشمیری آزادی کا سانس لیں گے۔یہاں پر یہ بات واضع کر دینا چاہتے ہیں کہ 23 مارچ۔14اگست اور 5فروری کے پروگرامز میں کسی کو خصوصی دعوت نہیں دی جاتی ایسے پروگراموں میں کمیونٹی کے ہر فرد کو عام دعوت ہوتی ہے، جیسا کہ عون بصرا schwarzwald، مغل جو ڈورٹمنڈ Dortmund۔ وقاص درانی،Siegen، Leverkusen، توقیر بٹر صابریSaarbrucken، احسن تارڑ، شیخ منیر Stuttgart سے ہر محفل کو رونق بخشتے ہیں، قاضی حبیب الرحمان،رفیق بٹ، خاص کر فرینکفرٹ، آفن باخ اور ڈارم سٹڈٹ کے بے شمار دوست ہیں جو پاکستان کی آواز پر لبیک کہہ کر اپنے کام کاج چھوڑ کر حاضر ہوتے ہیں۔ چوہدری اعجاز پیارا 500کلو میٹر کا سفر طے کر کے نہ صرف فرینکفرٹ بلکہ پوری جرمنی میں منعقد ہونے والی محفلوں کی کوریج کے لئے تشریف لاتے ہیں +قائم مقام قونصل جنرل شعیب منصور نے کمیونٹی کے ایک ایک فرد کا شکریہ ادا کیا، فرینکفرٹ قونصل خانہ میں تقریب کے دوران بہت دوستانہ ماحول رہا ہر کسی نے قونصل جنرل سے ملاقات کی اور موجودہ حالات کے علاوہ قونصل خانہ کے متعلق بھی بات چیت کی۔ قائم مقام قونصل جنرل شعیب منصور کا کہنا تھا کہ ہمیں ہر محفل اور تقریب میں کشمیر کا ذکر کرنا چاہیئے۔

ایڈیٹرچیف نذر حسین کی زیر نگرانی آپ کی خدمت میں پیش ہے