۔،۔ ناقابل تسخیر عظیم پاکستان۔ ( پہلو۔ صابر مغل ) ۔،۔

23مارچ1940کو مولانا فضل الحق نے قائد اعظم محمد علی جناح کی قیادت میں منعقدہ اجلاس میں تاریخی قرار داد پیش کی جس میں پاکستان کے نام سے مسلمانوں کے لئے الگ وطن کی قرارداد پیش کی،ان تاریخی لمحات کو80سال گذر چکے مگر آج بھی قوم میں وہی جذبہ کوٹ کوٹ کر بھرا ہے،یوم پاکستان کے موقع پر پوری قوم یک زبان ہو کر تجدید عہد کا اعادہ کرتی ہے،یہ ناقابل تسخیر اور خد تعالیٰ اور اس کے محبوب ﷺ کی خصوصی عنایت سے حاصل کیا گیا وطن بہت عظیم تر ہے،جو چیز خدا کے نام پر بنی ہو اسے تا قیامت قائم و دائم رہنا ہوتا ہے،دنیا کی بڑی بڑی طاقتوں نے اسے توڑنے، بکھیرنے کی مذموم کوشش کی مگر نہ صرف ناکام ہوئے بلکہ جن کرداروں نے بھی ایسا گھٹیا کردار چاہے وہ معمولی سا ہی کیوں نہیں تھا اسی دنیا میں کیفر کردار کو پہنچ گئے، ہر سال اس روز وفاقی دارلحکومت میں تمام مسلح افواج کی اجمتاعی پریڈ ہوتی ہے،شاہین اپنے کرتبوں سے آسمان کو بھی متحیر کر دیتے ہیں،گذشتہ سال ملائشیا کے وزیر اعظم اس تقریب میں مہمان اعزاز تھے،ترکی اور چین کے طیاروں نے فضائی کرتبوں میں کمال کر دیا،چین،سعودی عرب،سری لنکا،بحرین،برونائی اور آذر بائیجان کے دستوں نے پریڈ میں حصہ لیا،یوم پاکستان کے موقع ر ملک بھر میں تقاریب کا انعقاد کیا جاتا ہے ایوان صدر میں اعلیٰ شخصیات کو اعزازات اور ایوارڈز سے نوازا جاتا ہے،مگر اس بار ونگ کمانڈر۔۔۔ایف سولہ طیارے میں ریہرسل کے دوران فنی خرابی کے بعدرہائشی علاقے کو بچانے کی کوشش میں خود شہادت کا اعزاز پا گیا مگر بعد میں دنیا بھر میں پھیلی عالمی وباء کرونا وائرس کی وجہ سے نہ صرف پریڈ بلکہ یوم پاکستان کی تمام تقریبات منسوخ کر دی گئیں،پی ایس ایل کے نہ صرف آخری تین میچز منسوخ بلکہ ملک بھر میں ملک بھر میں ہونے والی سرگرمیوں کو محدو دتر کر دیا،دنیا بھر میں اس قوم کی یہ خصوصیت رہی ہے کہ اس نے ہمیشہ وطن کی حفاظت میں پیچھے مڑ کر نہ دیکھا،صلاحیتوں کے اعتبار سے پاک فوج نے دنیا میں نے نمبر ون حاصل کیا بلکہ اس کی ISI(انٹر سروسز انٹیلی جنس) نے متعدد بار دنیا کی بڑی بڑی خفیہ ایجنسیوں کو پیچھے چھوڑ دیا،کئی بار پڑوسی دشمن ملک کے ناپاک عزائم کو پہلے ہی افشا کرکے اس کے عزائم خاک میں ملا دیئے،گذشتہ سال فروری میں بھارت نے پاکستان کے ساتھ رات کے ندھیرے میں چھیڑ خوانی کی جو اسے بہت مہنگی پڑی ہمارے ہمہ وقت تیار،الرٹ اور جان ہتھیلی پر رکھے شاہینوں نے پل بھر میں اس کی سوچ کو ملیا میٹ کر کے رکھ دیاان کا پائلٹ ابھی نندن پاک سر زمین پر اپنے ناپاک وجود کے ساتھ اپنے حملہ آور طیارے کے ساتھ آن گرا،تاہم پاکستان نے اسے انسانی ہمدردی اور اعلیٰ ظرفی کے تحت با عزت واپس کر دیا تاہم ان کا حاضر سروس کمانڈر کلبھوشن یادیو اب بھی پاک فوج کی حراست میں ہے،یوم پاکستان پر اس بار کوئی ایک بھی تقریب نہیں ہو گی تاہم پاکستانیوں کا عزم نہ کبھی کم ہوا نہ کبھی ہو گایہ ماضی کی طرح تجدید عہد کا دن ہے پوری قوم اس عزم کی تجدید کرنا اپنا فرض سمجھتی ہے کہ وہ اس پاک اور عظیم خطہ زمین کے لئے اپنا تن من دھن سب کچھ قربان کرنے میں ذرا تحمل نہیں کرے گا،پک فوج جس کا ماٹو ہے ایمان،تقویٰ اور جہاد فی سبیل اللہ پر ہم جتنا بھی فخر کر سکیں کم ہے ابھی اسی ماہ ڈیرہ اسمعیل خان کے علاقہ میں دہشت گردوں کی ایک بہت بڑی کاروائی کو ناکام بناتے وہوئے کرنل مجیب الرحمان نے8دہشت گردوں کو کیفر کردار تک پہنچاتے ہوئے خود جام شہادت نوش کیا در اصل ہماری فوج کا یہ طرہ امتیاز رہا ہے کہ اس کے افسران خود ہمیشہ اگلی صفوں میں رہتے ہیں،یوم پاکستان سے چند روز قبل18مارچ کو دتہ خیل کے جنوب مغرب میں 7کلومیٹر دور ایک علاقہ کو سیکویرٹی فورسز نے گھیرے میں لیا تووہاں چھپے دہشت گردوں نے فائر کھول دیا جس کے نتیجہ میں متعدد دہشت گرد جہنم واصل ہوئے مگرماں دھرتی کے سپوت26سالہ لیفٹیننٹ آغا مقدس علی،لانس حوالدارقمر ندیم، سپاہی محمد قاسم اور محمد توصیف دھرتی پر قربان ہو گئے، رواں سال جنوری میں سپاہی اسد اور سپاہی محمد شمیم وطن پر قربان ہوئے،پاک فوج دنیا کا ایک منظم،پیشہ ورانہ کے لحاظ سے دنا بھر میں مانا ہوا ایک مایہ ناز ادارہ ہے جس کی بری،فضائی اور بحری افواج اپنی مثال آپ ہیں،ہماری میزائل ٹیکنالوجی سے دنیا لرزتی ہے،پاک آرمی 5لاکھ 50ہزار افراد پر مشتمل فوج ہے جس کے 5لاکھ ہی ریزو جوان ہیں،مجموعی طور پر پاک آرمی 58شعبوں پر مشتمل ہے تاہم اس کی اہم ترین کورز میں پاکستان باڈی گارڈز،Combat Arms ،آرمڈ،ملٹری انٹیلی جنس،ایوی ایشن،آرٹلری،سگنل،انجینئر،انفنٹری جمنٹ،سپیشل سروسز گروپ(SSG)،کوسٹ گارڈ،ملٹری پولیس،الیکٹریکل اینڈ مکینیکل انجینرنگ،ائیر ڈیفنس،میڈیکل،ریماؤنٹ اینڈ ویٹرنری لینڈ فارمز،آرڈننس،ڈینٹل اور Chaplian ہیں رجمنٹس میں پنجاب رجمنٹ (جس کا نعرہ ہے یا علی)بلوچ رجمنٹ (غازی یا شہید)فرنٹئیر فورس(لبیک)،آزاد کشمیر رجمنٹ،سندھ رجمنٹ،نادرن لائٹ انفنٹری رجمنٹ،رجمنٹ آف آرٹلری،مجاہد فورس،ایس ایس جی (جان بازم)اور رجمنٹ آف ائیر ڈیفنس شامل ہیں،پاک فوج میں کمانڈز کے ہیڈ کوارٹرز پنجاب اسٹرائیک کمانڈ (راولپنڈی)،پنجاب ہولڈنگ کمانڈ (لاہور کینٹ)،سندھ کمانڈ(کراچی کینٹ)،کشمیر کمانڈ(روالپنڈی کینٹ)،ویسٹرن کمانڈ (کوئٹہ کینٹ)اور اسٹریٹجیک کمانڈ (چکلالہ کینٹ)ہیں،ایجوکیشن کے لحاظ سے ملک بھر مین12آرمی پبلک سکولز اینڈ کالجز،سیل وار اینڈ Skillsکی تعداد10،ہائر انسٹیٹیوشن میں کماند اینڈ سٹاف کالج کوئٹہ،نیشنل ڈیفنس یونورسٹی اسلام آؓباد،یونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی،مقامی طور پر اسلحہ کی تیاری میں ہیوی انڈسٹری ٹیکسلا،ڈیفنس سائنس اینڈ ٹیکننالوجی آرگنائزیشن،پاکستان آرڈدننس فیکٹری،نیشنل ڈیولپمنٹ کمپلیکس،پاکستان ایرو ناٹیکل کمپلیکس اور کمپیوٹر ریسرچ سنٹر ہیں اس کے علاوہ امریکہ،چین،روس،برطانیہ،فرانس اور یورپی یونین سے بھی اسلحہ مدرآمد کیا جاتا ہے،پاک فوج کے پاس اس وقت الخالد،الضرار،80۔T،280اور288۔Tجیسے شہرہ آفاق اور جدید ترین ٹیکنالوجی سے لیس ٹینک ہیں جن کی ہیبت ہر وقت دشمن ملک پر طاری رہتی ہے،جے ایف تھنڈر،ایف سولہ،معراج طیارے،سی30،ئ7۔F،6۔F،5۔Fاسی طرح FT6اورFT5وغیرہ شامل ہیں ائیر فورس کا ماٹو ہے قوم کے لئے فخر کی علامت،،پاکستان ائیرو ناٹیکل کمپلیکس کامرہ پاکستان کی حدود کی حفاظت کے لئے کسی نعمت سے کم نہیں، پاکستان نئے چینی طیارے بھی بہت جلد خرید رہا ہے،پاکستان بھر میں اس وقت13آپریشنل ائیر بیس جبکہ 8کو چند لمحوں میں آپریشن کے قابل بنایا جا سکتا ہے،ائیر فورس کی کمانڈز میں اسٹریجیٹک کمانڈ اسلام آباد،نادرن ائیر کمانڈ پشاور،سنٹرل کمانڈ لاہور،ساؤدرن کمانڈ کراچی جبکہ ائیر ڈیفنس کمانڈ راولپنڈی میں ہے،پاک فوج میں شامل 8اقسام کے جدید ترین ہیلی کاپٹر شامل ہیں یہ ہیلی کاپٹرز امریکہ،روس،فرانس اور اٹلی سے حاصل کئے گئے،،پاک ائیر فورس میں 70ہزار ایکٹو آفیسرز و اہلکار ہیں 8ہزار ریزرواور128سویلین،کل ائیر کرافٹس کی تعداد1500سے زائد ہے جن میں مشاق،سپر مشاق،Chendu J7،قراقرام بھی شامل ہیں ان طیاروں میں تربیتی،اٹیکنگ،فائٹر اور ملٹی رول کے طیارے ہیں،پاک نیوی ہماری سمندری سرحدوں کی محافظ 37700افسران و اہلکاران پر مشتمل ہے ریزرو کی تعداد50ہزار،1200میرینز،2ہزار میری ٹائم سیکیورٹی،25سو کوسٹ گارڈزجبکہ 2ہزار سول افراد نیوی میں شامل ہیں،پاک نیوی کے پاس جدید آبدوزیں،100سے زائد بحری جہاز،14ائیر کرافٹ اور باقی دفاعی سازوسامان الگ ہے،پاک نیوی نے 1965اور1971کی جنگوں میں دشمن کو ناکوں چنے چبوائے،1046کلومیٹر ساحلی پٹی کا ذرہ ذرہ،کونہ کونہ پاک نیوی کی دسترس اور حفاظت میں ہے،نیوی کے تعلیمی وتربیتی اداروں کی تعداد19ہے،پاک نیوی کا ماٹو ہے،ہمت کا علم اللہ کا کرم اور موجوں پر قدم،پاکستان کی جدید ترین میزائل ٹیکنالوجیدنیا بھر کو متحیر اور پاکستان کی دفاعی صلاحیتوں سے خبردار کر رکھا ہے،میزائل رعد 2،یہ فضا سے فضا میں مار کرنے والا کروز میزائل ہے،یہ نظام جدید گائیڈنس اور نیوی گیشن سسٹم سے لیس سے جس کی وجہ سیکمال مہارت کے ساتھ فضا سے لانچ ہونے کے بعد زمین اور سمندر میں اپنے اہداف کو600کلومیٹر تک ٹھیک شانہ بنانے کی صلاحیت رکھتا ہے،پاکستان کا بیلسٹک میزائل غزنوی جو200کلومیٹر تک زمین سے زمین تک مختلف اقسام کے وار ہیڈ لے جانے کی صلاھیت رکھتا ہے غزنوی میزائل کی ایک قسم 290کلومیٹر تک میزائل دن اور رات میں اپنا کام دکھا سکتا ہے،شاہین۔1،650کلومیٹر تک ہر قوسم کے وار ہیڈ لے جا سکتا ہیشاہین ون کے بعد بھارت نے اگنی میزائل کا تجربہ کیا تھا،اعلیٰ شوٹ اینڈ الکوٹ ادغام کا حامل میزائل نصر جو زمین سے زمین پر اور کم فاصلے پراور حرکت کرنے والے ہدف کو ٹھیک نشانہ بنا نے کی صلاحیت رکھتا ہے سکتا ہے اس میں دشمن کے بیلسٹک اور دیگر ائیر ڈیفنس سسٹم کو بھی تباہ کرنے کی صلاحیت ہے،غوری میزائل ڈیفنس سسٹم روایتی اور نیوکلئیر لے کر13سو کلومیٹر تک مار کر سکتا ہے اس میزائل سے نیو کلئیر استعداد کار میں اضافہ اور وطن کو بیرونی حملوں سے محفوظ بنانے میں بہت مدد ملی،سب میرین کروذ میزائل450کلومیٹر تک زیر زمین سمندر میں مار کرتا ہے اسے آبدوز سے داغا جاتا ہے،یہ مکمل طور پر ملکی پیداوار ہے جس سے پاکستان نے قابل بھروسہ سیکنڈ اینڈ اسٹرائیک صلاحیت حاصل کی،پاک فضائی اور بحریہ نے مشترکہ طور پر نگ رینج اینٹی شپ میزائل کا بھی تجربہ کر رکھا ہے،بابر کرورز میزائل جڈید ایدو ڈائنامکلاور ایورنکس کا شاہکار ہے 700رینج کا یہ میزائل زمین اور سمدنر میں بی پی ایس نیوی گیشن سسٹم کی غیر موجودگی میں بھی مر کر سکتا ہے جو کم اونچائی پر پرواز کرتاہواانسیلتھ خصوصیات کا بھی حامل ہے،پاکستان کا شاہین۔3س کی رینج2750کلومیٹر ہے جو بھارت کے تمام حصوں تک پل بھر میں پہنچ سکتا ہے،اس کی رینج میں نہ صرف بھارت بلکہ اسرائیل،مشرق وطسیٰ اور جزائر انڈیمان تک ہیں،اس کے علاوہ ابدالی،حتف،نصر،غزنوی،شاہین ون،حتف2،غزہ اور اسٹنگرز میزائل ہیں غزہ میزائل وہ ہے جو انفراریڈز کے ذریعے حرارت کی تلاش میں دشمن جہاز کو دھونڈ نکالنے کے بعد اس سے ٹکراکر اسے تباہ کر دتا ہے،

ایڈیٹرچیف نذر حسین کی زیر نگرانی آپ کی خدمت میں پیش ہے