-,-کورونا سے نمٹنے کے لئے فرانس کے 8 میٹروپولٹن شہروں میں رات 9 سے صبح 6 بجے تک کرفیو لگا دیا گیا۔,-

فرانسیسی صدر ایمانوئل ماکخروں نے آج قومی ٹیلی ویژن پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے قوم کو آگاہ کیا۔ صدر کا کہنا تھا کہ کورونا کی بگڑتی صورتحال سے نمٹنے کے لئے حفاظتی تدابیر کے طور پر فرانس کے آتھ بڑے شہروں میں رات 9 سے صبح 6 بجے تک کرفیو کا نفاذکر دیا ہے۔ پہلے فیز میں یہ 6 ہفتوں کے لئے ہوگا جو دسمبر تک جا سکتا ہے۔صدر ایمانوئل ماکخروں قوم کو بتایا کہ اس وقت ہم ہفتہ وار 13 سے چودہ لاکھ افراد کو ٹست کر رہئے ہیں جن میں کم و بیش 20 ہزار افراد میں کورڈ 19 کے مریض روزانہ کی ریشوء سے نکل رہئے ہیں۔ جو کہ بہت زیادہ ہیں اگر یہی صوتحال رہی تو ہمارے پاس انہیں سمبھالنے کے سورس کم پڑ سکتے ہیں۔صدر کا کہنا تھا کہ ائندہ چھے ہفتوں میں ہم دیکھیں گے کہ ہم 20 ہزار افراد روزانہ کے کیسز میں کمی لا پائے تو یہ کرفیو دسمبر تک بڑھ سکتا ہے۔اگر نتیجہ حوصلہ افزاء نہیں ہوئے تو ہمیں مزید پریکاشن لینی پڑیں گی۔رات 9 کے بعد باہر اور دن میں بن ماسک کے 135 یورو فائن کیا جائے گا۔ فرانسیسی صدر اپنے اسی عزم کے ساتھ تھے کہ ہمیں کورونا سے ڈرنا نہیں بلکہ مقابلہ کرنا ہے۔ تمام پبلک آفسز کھلے رہیں گے۔ ضروری کام کرنے ہیں فالتو وقت سڑکوں پر نہیں گھروں میں رہنا ہے۔ماکخروں نے سوشل بینفٹ کی بھی بات کی مگر وزیر اعظم کی تقریر سے مشروط کر دی۔ ریسٹورنٹ کے بزنس سے وابستہ افراد کے لئے کمپنسیشن کی بھی بات کی۔

ایڈیٹرچیف نذر حسین کی زیر نگرانی آپ کی خدمت میں پیش ہے